راز کی باتیں جو بدل دیں زندگی

(Dr Zahoor Ahmed Danish, Karachi)

ہم سب ایک ہی دوڑ میں دوڑتے چلے جارہے ہیں ۔کانوں میں ایک ہی آواز گونجتی ہے ۔بس میں کامیاب ہوجاؤں ۔مجھے کامیاب ہوناہے ۔بس دعا کرو میں کامیاب ہوجاؤں۔یار بتاؤ کیا کروں کہ کامیابی مل جائے۔ کافی دنوں سے سوچ رہا تھا کہ مختلف جگہوں پر لیکچر بھی تو دیتے ہی ہیں نا تو کیا ہی اچھا ہو کہ اپنے پیاروں کے لیے ان ذریں اصولوں کوقلمبند کرلیا جائے ۔ آپ طالب علم ہیں یا استاد آپ تاجر ہیں یا نوکری پیشہ آپ سب ہی کے لیے ایسے نکات پیش کرتاہوں جو آپ سب کے لیے یکساں مفید ہوں گے ۔
 


٭آپ کیسے لگ رہے ہیں:
آپ نے عموماً دیکھا ہوگا کہ لوگ ابھی ہم سے ملتے بھی نہیں ۔نہ کبھی کوئی بات کی ہوتی ہے لیکن وہ ہمارے متعلق اپنی رائے قائم کرچکے ہوتے ہیں ۔کبھی سوچا؟نہیں ؟تو آج سوچ لیجئے ۔جی جناب ایسا ہی ہے ۔ہوتا یہ ہے کہ مابدولت گھر ہو یا باہر کبھی اپنی ظاہری شخصیت کو سنوارنے کی زحمت ہی نہیں کی۔ بال بکھرے ہوئے ہوتے ہیں ۔بوٹ پالش نہیں ہوتے ۔بٹن کھلے ہوئے ہوتے ہیں اور دفتر کی جانب کمربستہ ہوجاتے ہیں ۔اب جس گلی محلہ سے گزر ہوا۔جس دوکاندار سے کوئی چیز لی ۔دفتر میں جہاں کام کیا ۔وہ سب لوگ ہمارے اس لاابالی پن سے ہماری شخصیت کا خاکہ بنالیتے ہیں اور پھر وہ ہمیں اسی انداز میں ہم سے رابطہ بھی رکھتے ہیں ۔ ہمیشہ اچھا لباس ہو اور سیکھئے کہ کس موقع پر کیا پہنا جائے جس سے لوگ آپ کو پسند کریں اور دلچسپی لیں۔آپ اپنے باس کومتاثر کر سکتے ہیں اور اپنے آس پاس کے لوگوں کو بھی اپنی طرف متوجہ کرسکتے ہیں۔ آپ اچھے کپڑوں میں ہوں گے اور مناسب طریقے سے تیار ہوں تو آپ کو بھی اچھا لگے گا اور آپ پر اعتماد ہوں گے اور آپ کے کاموں میں مدد ملے گی۔


٭حرکات و سکنات:
ہماری حرکات و سکنات ہماری شخصیت کی ترجمان ہوتی ہیں ۔اس سے دوسروں کو ہمارے متعلق ہماری ذات کا پتا چلتا ہے ۔ہمارے چہرے کے تاثرات ، باڈی اور ہاتھوں کے اشاروں جن سے ہم اپنی فیلنگ کو دیکھ پاتے ہیں۔ اگر آپ مسکرا رہے ہیں تو دوسرا شخص سمجھے گا کہ آپ دوستانہ شخص ہیں ۔آپ گھور رہے ہیں تو سامنے والا بیزارگی کا تأثر لیتا ہے۔آپ عجلت میں ہاتھ ملاتے ہیں ۔مخاطب اس لمحہ بھر کی غفلت کا نہایت ہی غلط معنی و مفہوم لیکر ہمیشہ کے لیے آپ کے متعلق نالاں رہتا ہے ۔یوں اپنی حرکت کی وجہ سے آپ ایک اچھے انسان کی رفاقت سے محروم ہوگئے جو آپ کے لیے معاون ثابت ہوسکتا تھا۔ ایسے میں اپنی حرکات و سکنات پر غور کرتے رہیں ۔آپ کی کامیابی کے سفر میں آپ کا رویہ کارگر ثابت ہوتا ہے ۔


٭اپنے اندر سننے کا ظرف پیدا کریں:
ہمارا معمول بن چکا ہے کہ اپنی بات کہنے میں لمحہ بھر بھی نہیں ٹھہرتے اور دوسرے کی بات کاٹ کر اپنا مؤقف پیش کرتے چلے جاتے ہیں ۔اس کا پہلا نقصان کے سامنے والا نہ جانے کتنی اہم بات بتانے والا تھا جو ممکن ہے اس کے ذہن سے نکل جائے ۔دوسری بات یہ کہ اس کی ادھوری بات کا مفہوم کچھ تھا اگر مکمل سنتے تو بات سمجھ جاتے چنانچہ لمحہ بھر کی عجلت اور نہ سننے کی عادت کا نقصان یہ ہوا کہ ہم اس کے متعلق گمان کر بیٹھے یا پھر اس ادھوری بات پر اس سے الجھ گئے ۔کوشش کریں سامنے والی کی پوری تسلی سے پوری بات سنیں ۔اگر کچھ سمجھنے میں کمی رہ گئی ہے تو نفیس سا سوال کر کے اپنی الجھن کو دور کرلیجئے ۔کمیونیکیشن کا یہ بہت عمدہ راز ہے ۔آزما کر دیکھ لیں ۔آپ نے دیکھا ہوگا جب آپ کسی کی بات توجہ سے سنتے ہیں وہ آپ کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے ۔ایک بہترین ابلاغ کے تمام تر فوائد سے آپ استفادہ کرسکتے ہیں ۔


٭مثبت رویہ (Positive Attitude):
معاشرے میں رہنے والوں کی اک تعداد ہے جو گھٹ گھٹ کر جی رہی ہے ۔ایک دوسرے سے خوف زدہ اور بدگمان ہے ۔اگر تھوڑا غور کریں تو اس میں ایک اکائی مشترکہ دکھائی دیتی ہے اور وہ ہے غیر موزوں رویہ اور دوسروں کے متعلق غلط گمان ہونا۔چھوٹی چھوٹی باتوں کی وجہ سے ہم منفی سوچ اور ذہنی تناؤ کا شکار ہوکر اپنی شخصیت کو تباہ کررہے ہوتے ہیں ۔جن کے متعلق منفی سوچ کا شکار ہوتے ہیں بعض مرتبہ انھیں خبر تک نہیں ہوتی اور ہم کڑہتے چلے جاتے ہیں ۔پھر ہوتا یہ ہے کہ ہم یہی سوچتے رہتے ہیں کہ ہماری زندگی کتنی نا خوش ہے۔ مثبت رویہ ہماری زندگی میں ایک بڑی تبدیلی لاتا ہے جس سے ہم اپنے بارے میں بہتر سوچ پاتے ہیں (خود اعتمادی) ، یقین آتا ہے کہ ہم کر سکتے ہیں (اعتماد)۔ چاہے جتنی بھی مشکلیں کیوں نہیں ہوں مثبت رویہ ہمیں سب کا سامنا کرنے میں مدد کرتا ہے۔چین اور کامیاب زندگی کے طلبگار ہیں تو ابھی سے عہد کیجئے کہ ہمیشہ اچھا سوچیں گے ۔


٭ نظام الاوقات:
ابھی آپ کو نہیں پتا پر ٹائم بہت قیمتی ہوتا ہے۔ آپ اگر ایک دن کام پر نہیں آتے تو کوئی کام نہیں ہوتا۔ یہی نہیں اگر آپ لیٹ ہوتے ہیں تو اس وجہ سے دوسروں پر بھی اثر پڑتا ہے۔ سوچئے اگر آپ کسی تقریب میں دیر سے پہنچیں جہاں سب آ چکے ہیں اور آپ کا انتظار کررہے ہوں۔تقریب شروع نہیں ہو سکتی کیوں کہ آپ اس تقریب کا ایک اہم حصہ ہیں ۔ آپ کی وجہ سے کتنے لوگوں کا ٹائم برباد ہوا اور لوگوں پر آپ کا تاثر خراب پڑا۔ اسی طرح باقی چیزوں میں بھی، ورک، پروجیکٹ، میٹنگ ، اسکول، اسائمنٹ اور امتحان یا پھر کسی اسپیشل موقع پر آپ کو ذمہ داریاں اور کام کو مینج کرنا ہو؟ اپنے ٹائم کو موثر طریقے سے منیج کریں۔


٭پریشر کو قبول کرنے کا فن:
ہم کشیدگی محسوس کرتے ہیں جب ہم پر پریشر ہوتا ہے۔ باس کا پریشر، ماں باپ کا پریشر، میڈیا کا، دوستوں کا، کالجز کا اور ہمارا خود کا، کبھی یہ ہمارے لیے اچھا ہوتا ہے اور ہمیں مدد کرتا ہے بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنے میں اور کبھی لگتا ہے کہ ہم اور برداشت نہیں کر پائیں گے۔کچھ لوگ کشیدگی کو ہینڈل کرلیتے ہیں اور کچھ لوگوں کے لیے یہ کنٹرول سے باہر ہوجاتا ہے ۔ اگر آپ کو پتا ہے کہ آپ کو کشیدگی کو کیسے ڈیل کرنا ہے تب آپ ریلیکس رہتے ہیں اور اپنے کام پر توجہ مرکوز کر پاتے ہیں۔یہ بھی کامیابی کے باریک رازوں میں سے ایک راز ہے ۔تجربہ شرط ہے ۔آپ اسکی مشق کر کے تو دیکھیں زندگی سکھی ہوجائے گی ۔


٭معاشرتی اقدار اور اطوار اختیار کریں:
دنیا کے ہر مہذب معاشرے کی یہی تعلیمات ہیں کہ مہذب رہیں ۔ادب کریں ۔ادب ہی میں معاشرے کا حسن ہے ۔بات انفرادی زندگی کی ہو یا اجتماعی زندگی کی بہر صورت ادب و آداب کی ہر ہر لمحہ ضرورت ہوتی ہے ۔ادب و تعظیم بھلا کس کو پسند نہیں ۔تعظیم و تکریم ایک ایسا گُر ہے کہ اگر کسی کو پتا چل گیا تو اس نے مہینوں کو دنوں اور دنوں کو گھنٹوں میں بدل کر انسانیت کے دلوں پر راج کیا اور اپنے اہداف کو وصول کیا۔تابندہ بن کر برسوں دلوں کی دھڑکن رہے ایسے لوگ اپنے اچھے رویہ سے آپ دوسروں کی آنکھوں کا تارہ بن کر ترقی کے زینے طے کرسکتے ہیں ۔آپ ملازم ہیں یا تاجر آپ شاگرد ہیں یا استاد ذرا کوشش کرکے دیکھیں تو سہی شرطیہ بہترین نتائج آپ کا مقدر ہوں گے ۔


٭انسان دوست بنیں:
ہم انسان ہیں اور ہمارا واسطہ انسانوں ہی سے ہے چنانچہ کامیابی کا ایک قاعدہ بتا چلوں کہ انسانوں سے پیار کریں ۔کسی نے ضیافت کی ہے قبول کریں ۔کسی ہوٹل پر کھانے کی دعوت ہے فوراً قبول کریں ۔شادی کی دعوت ہے یا کوئی میٹنگ کا موقع ضائع نہ کریں ۔دوسروں کے ساتھ فرینڈلی رہیں ۔دوستانہ تعلقات پیدا کریں ۔چند ہی دنوں میں آپ دیکھتے چلے جائیں گے کہ آپ اپنے گھر میں ،دفتر میں فیکٹری میں ،اپنے شعبہ میں اپنے قریبی حاسدین کی بجائے محبین کی تعداد پائیں گے ۔کرکے تو دیکھیں ۔


٭بولیں اور کمال بولیں:
آپ بہت اچھا سوچتے ہیں ۔آپ کے پاس الفاظ کا ذخیرہ بھی ہے لیکن مدت سے کچھ کہہ نہیں پائے ۔ایک سوال آپ سے یہ بتائیں یہ جو سوچا اور یہ مطالعہ معلومات ہے اس کا کریں گے کیا۔کہیں ایسا نہ ہو یہ آپ ہی کے ساتھ دفن ہوجائے ۔پلیز دوسروں سے تبادلہ خیال کریں ۔آپ اپنی کہہ دیں غلط کہا تو درست ہوجائے گا اور اگر درست کہاتو داد مل جائے گی ۔کیا خیال ہے آپ کا ؟ دوسری بات یہ ہے اپنی مادری ،قومی زبان کے علاوہ دیگر دنیا میں رائج زبانوں کو بھی سیکھیں تاکہ وقت کے پہیہ کے ساتھ چل سکیں ۔جیسا کہ آج کل انگریزی زبان کامیابی کے لیے ایک زینہ ہے تو پھر اس زبان کو سیکھیں اس زبان میں دوسروں سے گفتگو کریں اپنی رائے دیں تاکہ بولنے کی جھجک ختم ہونے کے ساتھ ساتھ اس زبان پر گرفت بھی مضبوط ہو۔ایک وقت ایسا آئے گا کہ آپ کو آپ کے بولنے کی وجہ سے دنیا میں جانا جائے گا لوگ آپ کے بولنے کے انداز کو کامیابی کا زینہ سمجھ کر کاپی کریں گے ۔آپ کے بولے ہوئے کو کسی تصدیق سے کم نہیں جانیں گے -


خود شناسی:
میں کافی عرصہ سے لیکچر ،تقاریر ،نقابت ،تحریر ،تحقیق کی فیلڈ سے وابستہ ہوں ۔میں نے دنیا میں کامیاب لوگوں میں ایک چیز مشترک دیکھی اور وہ یہ تھی کہ انھوں نے خود کو پہچان لیا تھا۔انھوں نے جان لیا تھا وہ کون ہیں ؟اور کیا کرسکتے ہیں ؟چنانچہ جب self discovery کے مرحلہ سے گزرتے تو راستے ہموار ہوتے چلے گئے ۔ایک وقت ایسا آیا کہ ان میں سے کوئی جابر بن حیان بنا ،کوئی ابن الہیشم بنا،کوئی البیرونی ،کوئی ایڈیشن ،کوئی بل گیٹس ،کوئی عبدالقدیر تو کوئی قاسم علی شاہ ،کوئی قیصر عباس ،کوئی سندیپ مہاشوانی ،کوئی جاوید چوہدری تو کوئی کسی اور نام سے جانا گیا۔انھوں نے دنیا کو دریافت کرنے سے پہلے انھوں نے فن کی باریکیاں سیکھنے سے قبل ،انھوں نے فیلڈ چننے سے قبل خود کو دریافت کرلیاتھا۔چنانچہ پھر اپنی دریافت سے دنیا میں عزت ،شہرت ،منصب کے بڑے بڑے عہدوں پر ناصرف فائز ہوئے بلکہ دوسروں کو بھی کامیابی کے گُر بتانے لگے ۔برائے کرم خود کودریافت کریں ۔خود شناسی پیداکریں ۔نتائج جلد ہی آپ کے سامنے آجائیں گے ۔


محترم قارئین!
دیکھیں میں موٹیویشنل ٹرینر ضرور ہوں ۔لیکن آپ میرے اپنے ہی ہیں۔ وہ لمبی لمبی دلیلیں وہ لمبی کہانیاں نہیں سنا رہاسیدھی اور صاف باتیں کررہاہوں ۔ آپ میرے اپنے کامیاب ہوسکیں ۔آپ کامیاب ہوں گے تو مجھے بہت خوشی ہوگی۔آپ کا نام ہوگا تو ڈاکٹر ظہوراحمد دانش کو اپنی کامیابی محسوس ہوگی وجہ صرف ایک ہی ہے کہ میں نے اپنے استادوں سے یہی سیکھا ہے ۔اچھا سوچو۔اچھا بتاؤ اور اچھا کرو۔

آپ کو کسی بھی کیرئیر پلاننگ ،سیلف ڈیویلپمنٹ ،کمیونیکیشن سکلز کے حوالے سے ہماری مدد درکار ہو۔آپ ہم سے رابطہ کرسکتے ہیں ۔ہمارا مشن بکھرے ہووں کو سمیٹنا،پریشان حالوں کی دادرسی ،علم کے طلبگاروں کی معاونت اور اچھا زندگی اور شفاعت بھری آخرت کے حصول کے لیے کوشش ہے ۔ڈاکٹر ظہوراحمد دانش کو اپنی دعاؤں میں ضرور یاد رکھئے گا ۔
Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
27 Dec, 2016 Total Views: 6843 Print Article Print
NEXT 
Reviews & Comments
Dr zahoor apne to mere zindgi badal di hy.me kis trah apka shukria ada keron bta nae sakte.plz app apne vedio be share karain.ager apke lecture mil jain to hum per boht ehsan hoga.me apko mail address per apne kuch mushkilat sahre karonge.plzzzzzzzzzzzzzz
By: kawish, LAHOR on Jan, 01 2017
Reply Reply
0 Like
One horseman came to motel.s stable, got off the horse like the cavalier.He handed over his horse with the riding gear for over- night parking with full service.Rich horseman left to book the room.AN -OTHER horseman like military trainer arrived and quickly handed over his horse to the stable person to park over- night with the full package.The latecomer was in big rush.They both got the rooms on ground level and side by side.Thief LEFT to- night clerk to bridge the gap.Thief returned to find out his victim on the bed.The thief SAT ON THE BED TO ALLOW HIS victim to go in deep sleep. After a while the thief went to the victim,s without shoes.The thief ran- sacked whole - room . But the thief could find no money.Thief returned to his room to sleep then try again but the thief woke up to see the day -light.THe thief went to victim room.The thief found his victim already awoke on the bed.The thief wanted to know. where the money was stashed last night.you just tell me,i just back off.The victim and thief came to thief,s bed.The victim said to the thief,So,you wanted to know, where did i put the money last night.The victim pick up his money from thief,s bed pillow.THE thief became flabbergasted and thief,s mouth fell open.THE thief told victim what is your secret.I keep my full focus on permanent success.In the life -span, you get temporary success if you did not any weeds or you did not build in roads,you will be awarded permanent success otherweis you are in misconception,?//?
By: IFTIKHAR AHMED KHAN, CALGARY ALBERTA CANADA on Dec, 30 2016
Reply Reply
0 Like
MOST RESPECTABLE!
IFTIKHAR AHMED KHAN !!
ME UNDERSTAND THANK FULL FOR YOU.YOU KNOW No person can be completed ۔We offer information to knowledge which we know .so i wrote this article for my beloved reader.bundle of thanks you share your own word your vision with us.
your brother:
Dr Zahoor Ahmed Danish
By: DR ZAHOOR AHMED DANISH, karachi on Jan, 01 2017
0 Like
Salam : Dr: Zahoor Ahmed Danish....
Masha Allah Ap ki Tahrir Parh k Boht Sukoon Mela Allah Pak Ap ko Is ka Agar Ata Farmae Allah Pak Ap ki Umar Lambi Ata farmae Me Ap ko Both Like Krta Hon Masha Allah Jub Ap Ka Kalm Mubark Chalta hai To Kamal He Krdeta hai Ap Ki Tahrer Ka Aik Aik Alfaz Aesa HAI k DIL Me Pewas Hojata Hai Allah Ap Ko apny kam Me Tarki Ata frmae Is Thara ki Tahrer Pash Krte Rhe Ga Ase Apny PAN K Sat Aslam O Alekum............
By: Ejaz Ahmed, Karachi on Dec, 29 2016
Reply Reply
0 Like
MashaAllah Bohat He Zabardast Hain
By: Muhammad Tariq, Sialkot on Dec, 28 2016
Reply Reply
0 Like
Jazak Allah Dr. Sb
Allah ap ko Khush rakhy aor younhi muhabten bantny ki himat dy ..
plz muje zara guide krden k mae kroun
mae ny Allama Iqbal University sy BA. Mass Comm. Kya hy aor aik Chota sa magzain start kya hy Business promotion k naam sy ..
likn income na hony k brabr hy ...
mujy sahafat ka bht shok hy aor Allah k fazl sy knowledge b hy ...
Azray mehrbani meri rehnumai frmaden...
Jazak Allah Khaira..
javed Iqbal
[email protected]
03002292166
By: Javed Iqbal, karachi on Dec, 28 2016
Reply Reply
0 Like
بہت خوب ڈاکٹر ظہوراحمد دانش، پڑھ کر مزہ آگیا۔
By: Allah Ka Banda, Karachi on Dec, 27 2016
Reply Reply
1 Like
SIR AIK ARSA BAAD KISI NE DIL KO CHHU LENE WALI TAKHLEEQ LIKHI HAI KHUSUSAN LAST PARAGRAPH KYU K ADHAY SE ZIADA PAKISTANIO KO CAREER GROWTH K LIYE KOI MASHAL-E-RAH HE NAI MILTA OR AGAR MILTA BHI HAI TO AKSAR DUBO DENE KA KAAM KRTA HAI. AISAY RASTAY GHARTA HAI K JO HASIL HAI WO BHI JATA REHTA HAI BUT AAP KI TEHREER SE LAG RAHA HAI AAPKA BTAYA HUA RASTA KAMYAB HE HO GA.
By: MUHAMMAD AMJAD, Karachi on Dec, 27 2016
Reply Reply
3 Like
Ap k ehsasat insan dost nazer or kuch ker guzarne ke lagan tbinda mustaqbil ke naveed hy.ache rufaqa atia e rabani hy
By: Dr Zahoor Ahmed Danish, karachi on Dec, 27 2016
2 Like
ماشاء اللہ اور جزاک اللہ ڈاکٹر صاحب! آپ کا جذبہ قابل قدر ہے۔ اللہ پاک آپ کو اپنے مشن میں کامیاب کرے اور آپ کی ہر جگہ مدد کرے۔ اور ہمیں آپ سے نفع حاصل کرنے والا بنائیں۔ آمین
By: Owais Paracha, Karachi on Dec, 27 2016
Reply Reply
1 Like
شکریہ۔ آپ کی دعائیں محبت بھرے الفاظ آکسیجن کی مانند ہیں ۔میرے عزم و حوصلوں کو تقویت ملتی ہے
By: ڈاکٹرظہوراحمد دانش, KARACHI on Dec, 27 2016
Reply Reply
2 Like
Outstanding . . . !!!
By: M.Mubeen Shahzad, Faisalabad on Dec, 27 2016
Reply Reply
2 Like
Dr Zahoor Ahmed Danish Ap say Rabta kis tarha kia jasakta hy?
By: ZEESHAN KHAN, Karachi on Dec, 27 2016
Reply Reply
1 Like
محترم برادرم
السلام علیکم ورحمۃ اللہ و برکاتہ
سب سے پہلے میں ممنون ہوں کہ علم دوست کاششوں کو قبول کرنے اور داد دینے کا ظرف رکھتے ہیں ۔اآپ میرا میل ایڈریس نوٹ فرمالیں۔
[email protected]
By: DR ZAHOOR AHMED DANISH, karachi on Dec, 27 2016
1 Like
SUBHAN ALLAH AZZAWAJAL , MASHAH ALLAH AZZAWAJAL kya bat ha bhot he ala or kamal ka mazmoon publish kya ha app nay janab JAZZAK ALLAH AZZAWAJAL KHAIRA
By: Tahseen, Dubai - UAE on Dec, 27 2016
Reply Reply
0 Like
MashAllah Bhut Bhut hi khubsoorat infor share ki hai Allah pak Apko KHush rakhy
By: shahroz, Islamabad on Dec, 26 2016
Reply Reply
2 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
What is it that makes people successful and I mean really successful compared to you or me? Are they smarter or do they work harder? Are they risk takers or have powerful and influential friends?
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB