Famous Personalities Articles

Famous Personalities - The Nation is known to be by its famous citizens, so we decided to provide you the wide range of articles on many famous personalities, read our article about famous personaliti.. Read more

Famous Personalities - The Nation is known to be by its famous citizens, so we decided to provide you the wide range of articles on many famous personalities, read our article about famous personalities and know about one of your fans.

LATEST REVIEWS

سعودی شہزادے الولید بن طلال کا شاہانہ طرزِ زندگی
Is prince ki yeh daulat is k liay wabal ban jayegi jab woh roz-e-hisab is ka hisab nahi de paye ga. Allah knows better.
By: Syed Mubashir Hussain, Dammam on Mar, 22 2017

معروف دانشور٬ ادیب اور ڈرامہ نگار اشفاق احمد
No its 2004
By: Sadia, Karachi on Mar, 17 2017

معروف دانشور٬ ادیب اور ڈرامہ نگار اشفاق احمد
You type wrong date of death plz correct it. Ashfaq ahmed passed away in 2006. Not 2004!
By: Syeda, Karachi on Mar, 15 2017

شانِ افضل ُالبشر بعدَ الانبیا
MA SHA ALLAH sir mujy apny naseeb par fakhar ha k mujy Allah ne ap jesa zaheen baa ilm or hikmat Walay ustaad say navaaza....MaShaAllah ustaady muhtram ur article is just awesome
By: Usman, Jhelum on Mar, 08 2017

میرے حضور حافظ الحدیث اصحاب علم و دانش کی نگاہ میں
Awesome Article....😍😍...very knowledge full.....
By: Usman, Jhelum on Mar, 05 2017

بانو قدسیہ :کس سمت لے گئیں مجھے اس دِل کی دھڑکنیں
سائیں جیوے شالا سد اسکھی پئے وسو
تسان بہون چنگا مضمون لکھیا اے ۔ایہہ مضمون پڑھ کے دل خوش ہو گیا اے۔عالمی شہرت دی حامل ادیبہ نو چنگے لفظاں وچ خراج تحسین پیش کر کے تساں ادب دا مان ودھایا اے۔
By: Sher Khan , Sargodha on Mar, 03 2017

مجید امجد٬ جدید اردو نظم کے ایک اہم ترین شاعر
Majeed Amjad ki parwarish on k nanhyal may hui
By: Farhan Khursheed Meo, Lahore on Mar, 02 2017

اداکا ر حبیب مرحوم
ا خبار جہاں تاریخ 25 اپریل - 1 مئی 2016 میں اداکار حبیب کا ایک واقعہ لکھا ہے جس سے انکی عظمت کا اندازہ لگا یا جا سکتا ہے - اداکار حبیب کے بہت ہی ہرے دوست لکھتے ہیں کہ ایک اداکارہ کو ان کے کہنے پر انکے مقابل ہیروئن لیا گیا - ایک روز اس فلم کے ہدایت کار نے اداکارہ کی رضامندی سے غسل خانے میں اس کے نہایت ہی عریاں مناظر فلم بند کئے - اداکارہ سمجھتی تھی کہ شاید یہ اقدام اسے کامیابی سے ہم کنار کرے گا - اداکار حبیب کو جب یہ علم ہوا تو وہ اس ہدایت کار پر بہت برہم ہوئے اور فلم ہی چھوڑ کر چلے گئے - یہ وہ زمانہ تھا جب ان کا نام ہی فلم کی کامیابی تصور کیا جاتا تھا - ہدایتکار کے لئے ایک بہت بڑا مسئلہ بن گیا - اس نے معافی تلافی کے لئے سارے جتن کر لئے لیکن حبیب اپنے فیصلے پر اڑے ہی رہے - آخر ہدایت کار درمیان میں ایور نیو اسٹوڈیو کو لیکر آیا اور حبیب اس طرح نرم ہوئے کہ انہوں نے شرط رکھی کہ ان مناظر کی نیگیٹیو کیمرے میں ہی تلف کردی جائے گی
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Feb, 24 2017

بانو قدسیہ :کس سمت لے گئیں مجھے اس دِل کی دھڑکنیں
I have studied this article with keen interest.Bano Qudisa(Late) was a legend of Urdu Fiction.Her services for promotion of feminism in Pakistan will be remembered for ever.She worked hard for bringing positive awareness among women in the world.He novel "King Vulture "is considered classic in world literature .May her soul rest in peace in heaven . I had the opportunity to see this trend setter writer in 1980.She always encouraged the women in all fields of life.Her husband Ashfaq Ahmad was also a great writer .I like the style and discourse of Dr.Rana whof paid good tribute to departed Bano Qudsia.Thank you very much for t his important article based on the memories of a great writer who served the nation for more than seventy years.
By: Rana Sultan Mehmood Khan , Golarchi on Feb, 18 2017

انتظار حسین -- وہ میرے غائبانہ استاد محترم تھے
انتظار حسین کے ناول "بستی" سے ایک اقتباس
"بیٹے ! یہ اُس گھر کی چابیاں ہیں جس پر اب تمھارا کوئی حق نہیں ہے۔" اس گھر کی اور اس زمین کی روپ نگر کی چابیاں۔
چابیاں یہاں میرے پاس ہیں اور وہاں ایک پورا زمانہ بند ہے، گزرا زمانہ۔ مگر زمانہ گزرتا کہاں ہے۔ گزر جاتا ہے پر نہیں گزرتا۔
آس پاس منڈلاتا رہتا ہے اور گھر کبھی خالی نہیں رہتے۔ مکین چلے جاتے ہیں تو زمانہ ان میں بسا نظر آتا ہے۔
روپ نگر کے کتنے پرانے مکان اس کے تصور میں پھر گئے۔ وہ بیری والا گھر، وہ جو مسجد والی گلی میں تھا
اور جس کے صدر دروازے میں بڑا سا تالا پڑا تھا، جس پر زنگ لگ گیا تھا
اور اندر کئی کوٹھریوں کی چھتیں گر پڑی تھیں۔ بس دیواریں کھڑی رہ گئی تھیں
--------------------------------------------------------
انتظار حسین کے “ آخری آدمی “ سے ایک اقتباس

الیاس اس قریے میں آخری آدمی تھا۔ اس نے عہد کیا تھا کہ معبود کی سوگند میں آدمی کی جون میں پیدا ہوا ہوں اور میں آدمی ہی کی جون میں مروں گا۔ اور اس نے آدمی کی جون میں رہنے کی آخر دم تک کوشش کی
بشکریہ ثمر صدیقی صاحبہ
By: Munir Bin Bashir, Karachi on Feb, 02 2017

MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB