ہیضہ٬ احتیاطی تدابیر اور علاج

(Dr Ch Tanweer Sarwar, Lahore)

ہیضہ ایک متعدی مرض ہے جو cholera Bacillis نامی کیڑے سے پھیلتا ہے۔ گندہ پانی ہیضہ کا سبب بنتا ہے۔چھوٹے بچے اور ایسے افراد جن کا ہاضمہ کمزور ہو وہ جلد ہیضہ کا شکار ہو جاتے ہیں۔ موسم گرما میں یہ بیماری زیادہ تر پاکستان، ہندوستان اور ایشیاء میں پھیلتی ہے۔لیکن اب تمام ممالک میں یہ مرض عام ہے۔
 


اگر یہ مرض ہو جائے تو مریض کو دست لگ جاتے ہیں اور قے آنا شروع ہو جاتی ہے۔جس کی وجہ سے مریض میں پانی کی کمی ہو جاتی ہے۔شدید پیاس لگتی ہے۔ اس کے ساتھ ہلکا بخار بھی ہو جاتا ہے مریض مکمل طور پر نڈھال ہو جاتا ہے مریض کے ہاتھ پاؤں سرد ہو جاتے ہیں۔چہرہ زرد پڑ جاتا ہے۔ ایسی صورت حال میں فوری داکٹر سے رجوع کریں اور اس کا بر وقت علاج ضروری ہے ورنہ یہ بگڑ سکتا ہے اور دیر ہونے پر خدانخواستہ جان بھی جا سکتی ہے۔اگر مریض کو الٹیاں زیادہ ہوں تو اس کو ٹھوس غذا نہ دیں۔

امریکہ جیسے ترقی یافتہ ملک میں بھی ہیضہ سے ہزاروں لوگ ہلاک ہو جاتے ہیں۔اس کی تشخیص کے لئے اپنے سٹول کا ٹیسٹ کروائیں تاکہ ہیضہ کے جراثیم کے بارے میں معلوم ہو سکے۔

مریض کو زیادہ سے زیادہ پانی پلائیں اور خاص طور پر چھوٹے بچوں کو ORS پلاتے رہیں۔ہیضہ کی وبا جب پھیل جائے تو پھر ہمیں درج ذیل احتیاطی تدابیر اپنانی چاہیں۔
 


احتیاظی تدابیر:
٭ پانی ہمیشہ ابال کر پئیں۔
٭بازار کے کھانوں اور مشروبات سے مکمل پرہیز رکھیں۔
٭ ہمیشہ صاف ستھری اور متوازن غذا کا استعمال کریں۔
٭ پیاز کا استعمال ضرور کریں۔
٭ روزانہ نہائیں اس کے علاوہ اپنے گھر اور ارد گرد کی صفائی کا خیال رکھیں۔
٭کھانے پینے کے برتنوں کو ڈھانپ کر رکھیں۔
٭ پھل اور سبزیاں دھو کر استعمال میں لائیں۔
٭ گلی سڑی سبزیاں اور پھل نہ کھائیں۔
٭ مریض کو کچھڑی اور شوربہ وغیرہ دیں۔
٭ مریض کے کپڑے اور بستر کو صاف ستھرا رکھیں۔

علاج:
٭ پیاز کا پانی نکال کر پئیں۔
٭ پودینہ کا پانی پینے سے بھی ہیضہ ختم ہو جاتا ہے۔
٭ مرض کے شروع میں ہومیو پیتھک دوا کیمفر Q کے ۵ قطرے پانی میں ملا کر ہر پندرہ منٹ بعد دیں۔بچوں میں خوراک کے لئے ہومیو پیتھک ڈاکٹر سے رابطہ کریں۔دوا کا استعمال ڈاکٹر کے مشورے سے کریں۔
٭ ہومیو پیتھک ادویات کے لئے قریبی ہومیو پیتھک ڈاکٹر سے جوع کریں۔

Disclaimer: All information is provided here only for general health education. Please consult your health physician regarding any treatment of health issues.
Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
30 May, 2016 Total Views: 2715 Print Article Print
NEXT 
Reviews & Comments
ONCE I WAS IN PAKISTAN. MOST PROBABLY I WAS WITH OTHERS WAITING FOR DOCTOR.I WAS HYPOTHETICAL SAYING IF EVERY CITIZEN PICKS UP FROM THE ROAD AND PUT THEISE LOOSE GARBAGE IN A BIN. THE PAKISTAN COULD BE CLEANER THEN MIRROR.AN OTHER PERSON HEAVIER THE BUFFLO SHOUTED;;SHUT UP YOU DP[DIS PLACE PERSON].I BECAME SCHOCKED AND LOOKING LIKE DOLL TO HIM. I BECAME MOTION -LESS LIKE OTHERS./////
??? WHAT I WANTED TO DRIVE NOW I WILL NEVER ABLE TO SAY IN PAKISTAN OR WRITE.I WILL BITE BULLET. PLEASE ALLOW ME TO SAY, THAT PEOPLE SHOULD USE TOILET PAPER BEFORE STANJA.IF TOILET ROLES ARE OUT OUT OF REACH THEN NAILS SHOULD BE GROOMED AND SOME KIND MECHANISM TO CLEAN BEFORE ENTERING KITCHEN.:::?????""
By: IFTIKHAR AHMED KHAN, CALGARY ALBERTA CANADA on May, 31 2016
Reply Reply
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
Cholera is a serious bacterial disease that usually causes severe diarrhea and dehydration. The disease is typically spread through contaminated water. In severe cases, immediate treatment is necessary because death can occur within hours. This can happen even if you were healthy before you caught it.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB