میں سلمان ہوں(٨٨)

(Hukhan, karachi)

پھر سے خود کو تنہا سا کر لیا
آج پھر کسی نے بے وجہ ہی غم دیا
ہر بار کی طرح ہمیں ہی برا بنا دیا
کمزور ہیں ہم پھربھی اک اور صدمہ دیا
خواہش تھی محفل کی مگر تنہا کر دیا

پولیس سٹیشن کے اندھیرے سےلاک اپ میں سلمان اوندھے منہ لیٹا ہوا تھا،،،اسے کچھ سمجھ
نہیں آرہا تھا،،،کہ اس کا نچلا دھڑ ہے بھی یا نہیں،،،یا پھر وہ عمر بھرکے لیے اپاہج ہو چکا ہے
اس کے چہرے پر کسی نے پانی پھینکا،،،اس کاچہرہ ایسا ہو رہا تھا،،،جیسے گرم توا ہو،،،جس
جس پرابھی ابھی روٹی لگائی ہو،،،پانی نے توے کی جلن میں اوربھی اضافہ کردیا،،،

اس کو کسی نے بڑی سی گالی دی،،،اس کو ہوش میں لاؤ،،،منظورے ،،،ورنہ اس کی جگہ تجھے
لٹکا دوں گا،،،اس کی جو جو جگہ رہ گئی ہے،،،وہ تیری لال کر دوں گا،،،
سلمان کی پیٹھ ،،اس کےپاؤں کے تلوے اس کے وجود کا ساتھ نہیں دے رہے تھے،،،سلمان
بس اتنا بول پایا،،،سر‘‘ گالی نہ دیں‘‘،،،جتنا مارنا ہے مار لو،،،میرا آپ کا حساب روزِ حساب ہوگا
میں اتنا کمزور نہیں کہ خدا سے فریاد نہ کر سکوں،،،
ماں بہن تو سب کی سانجھی ہوتی ہیں،،،اس کے بعد وہ پھر سے خاموش ہوگیا۔۔۔

گرم پانی کا قطرہ اس کے گال پرآگیا،،،
اٹھ جا بیٹا،،،بے ہوش نہ ہونا،،،صحیح نہیں ہے،،،ایسا نہ ہو کہ ہوش ہی نہ آئے،،،سلمان نے
دائیں کروٹ لے کر اک کراہ کے ساتھ آنکھیں کھولی،،،
گھنی الجھی ہوئی دا ڑھی والا پچاس سالہ شخص جس کی آنکھوں میں آنسوتھے،،،اسے ہوش میں
لانےکی کوشش کر رہا تھا،،،بہت مارا ہے بیٹا ظالموں نے،،،میں نے جب آوازیں سنی،،،
گڑگڑا کر اللہ سے کہا،،،یااللہ! یہ آوازیں تو بے قصور کی ہیں،،،مدد فرما،،،سلمان نے ہلنے کی
کوشش کی،،،وہ کوشش بس اک کراہ بن کے رہ گیا،،،،

سلمان مردہ سی آواز میں بولا،،،مت روئیے،،،مت،،،روئیے،،،میں ابھی زندہ ہوں،،،ان کے ہاتھوں
نہیں مروں گا،،،درد تو بچپن سے ساتھ ہے،،،اس کےبنا تو جینے کا کوئی مزا نہیں،،،
بس کوئی گالی دیتا ہے ماں کی،،،تو درد نا قابلِ برداشت ہو جاتا ہے،،،ویسے بھی میرے
لیے اب کوئی نہیں روتا،،،آپ بھی مت روئیے،،،
کیوں نہ روؤں،،،مجھےمیری اولاد نے کبھی ‘‘ آپ‘‘ نہیں کہا،،،بس اک بیٹی ہے جو بابا کہہ دیتی
ہے،،،وہ بھی پرائے گھر کی ہوگئی،،،

سلمان نے اشارے سے پانی مانگا،،،پانی نےآگ کےآلاؤ کو ٹھنڈا کر دیا،،،آگ جواس کے
اندر جل رہی تھی۔۔۔(جاری)
 

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
24 Sep, 2017 Total Views: 509 Print Article Print
NEXT 
About the Author: Hukhan

Read More Articles by Hukhan: 803 Articles with 306269 views »

Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
Reviews & Comments
ye nahi hona chahye kisi k sath pr hojaya krta hai aksat kisi na kisxi beqasur k sath jiska dard tmam umr nahi bhulaya ja skta shyd. Allah mehfuz rakhay sb ko esi surt e hal ka samna krny sy
feeling sad after reading this episode
By: uzma ahmad, Lahore on Sep, 24 2017
Reply Reply
0 Like
thx for your precious time and words for my novel,,,,yes its brutal face of our so called islamic society .in our society power and money decides the right and wrong
By: hukhan, karachi on Sep, 25 2017
0 Like
Sad episode......
By: Mini, Mandi bhauddin on Sep, 24 2017
Reply Reply
0 Like
thx,,,, yes it is
By: hukhan, karachi on Sep, 24 2017
0 Like
good brother
By: sohail memon, karachi on Sep, 24 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: hukhan, karachi on Sep, 24 2017
0 Like
bad and black face of our law and social set up rude and senseless socity
By: khalid, karachi on Sep, 24 2017
Reply Reply
0 Like
thx for deep eye
By: hukhan, karachi on Sep, 24 2017
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB