وزیراعظم کی “داستانِ حیات“ زبردستی کتب خانوں میں رکھنے کا انکشاف

 

حال ہی میں پاکستان کے وزیراعظم جناب میاں محمد نواز شریف کی سوانح عمری “ داستانِ حیات “ کو پنجاب کے محکمہ آرکائیو اینڈ لائبریری کی جانب سے تمام کتب خانوں اور تعلیمی اداروں میں رکھے جانے کی منظوری دی گئی ہے- اس خبر کو کچھ حلقے حکمران جماعت کی چاپلوسی کی نظر سے دیکھ رہے ہیں-
 


واضح رہے کہ کوئی پہلی دفعہ نہیں کہ کسی سیاسی رہنما نے کوئی کتاب لکھی ہو- ماضی میں جنرل (ریٹائرڈ) ایوب خان اور جنرل (ریٹائرڈ) پرویز مشرف کی کتب بھی شائع ہوچکی ہیں-

کتاب کی خریداری کے لیے خط ارسال
پنجاب آرکائیو اینڈ لائبریری ونگ اور جنرل ایڈمنسٹریشن ڈپارٹمنٹ نے 4 جنوری 2017 کو طارق احمد خان کی کتاب کی منظوری دی اور ساتھ صوبے بھر کے تعلیمی اداروں اور کتب خانوں کو ایک خط بھی ارسال کیا- اس خط کے ذریعے پنجاب پبلک لائبریریز اور اسکول و کالج کے ڈائریکٹرز آف پبلک انسٹرکشن کو حکومت کی جانب سے منظور کی گئی کتاب کو زیادہ سے زیادہ فروخت کرنے کی سفارش کی گئی-

سیکرٹری آرکائیوز اینڈ لائبریری ونگ احمد رضا سرور نے کتاب کا بغور جائزہ لیا اور اس کو کسی بھی قسم کے قابلِ اعتراض مواد سے پاک پایا-

اس بارے میں مزید وضاحت کی گئی کہ نواز شریف تیسری بار ملک کے وزیراعظم منتخب ہوئے ہیں اور نوجوان نسل اپنے وزیراعظم کے بارے میں جاننا چاہتی ہے اور ایسی کتب کو لائبریریز کی جانب سے خریدا نہیں جاتا٬ لہٰذا پبلشرز سرکاری اور تعلیمی اداروں کی لائبریریوں میں ان کتابوں کو پوسٹ کے ذریعے فروفخت کرنے کے سہارے چلتے ہیں-
 


عوام کا ردِ عمل
کئی ادبی حلقے اس اقدام کو حکمران جماعت کی خوش آمد کرنے اور حکومت کی چھتری تلے پیسہ بنانے کی کوشش قرار دے رہے ہیں-

نصابی کتب کے ماہر عامر ریاض کے مطابق “ اس کتاب کا مقصد بچوں کو سکھانا نہیں بلکہ حکمرانوں کو مطمئین کرنا ہے اور ایسی کوشش ہر سطح کے طلبہ کو ذہنی طور پر منتشر کر دیتی ہے“-

پنجاب ٹیچرز یونین کی جانب سے بھی ایسی کتاب کی فروخت کو پیسے بنانے کا ذریعہ قرار دیا گیا ہے اور اس بات کا بھی انکشاف کیا گیا کہ اس کتاب کی خریداری کے لیے سرکاری اسکولوں پر دباؤ ڈالا جارہا ہے-

آپ خود سوچیے کہ کیا آپ وزیراعظم کی اس کتابو کو پڑھنے میں دلچسپی رکھتے ہیں:

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
02 Feb, 2017 Total Views: 3703 Print Article Print
NEXT 
Reviews & Comments
I strongly condemn this stupid act of Govt for putting by force this self created story of NS on schools, Libraries & other book stores. I don't wanted my kids to read this stuff which is opposite to the reality & why they should learn about a characterless & Loose character woman as Daughter of Pakistan, What are the international or National achievement of this corrupt Sharif Family. They have Mastered their skills in lying, corruption, lawlessness & a team of fools which is always in buttering them. I request the SC to take Suomoto on such foolish acts of Govt & order them to lift the books from Public places with no further delay. Any body (darbari) wanted to read this, He should invest his money & time (If he has) then read the lies.
Best of Luck
By: Muzammil Shah, Riyadh KSA on Feb, 04 2017
Reply Reply
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
Prime Minister Nawaz Sharif’s biography, titled “Dastan-e-Hayat” has recently been approved by the Punjab Archives and Libraries Wing and all public educational institutes and libraries in Punjab have been urged to stock up on the book. The instance is being viewed as a dictatorial initiative by the government or a servile attempt by the Punjab’s bureaucracy to gain some favors with the ruling party.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB