پرائز بونڈ٬ وہ معلومات جو آپ حاصل کرنا چاہتے ہیں

 

آج کل کون کم وقت میں زیادہ پیسے کمانا نہیں چاہتا؟ شاید ہی کوئی ایسا ہو! جدید دور میں زمانے کے ساتھ قدم سے قدم ملانے کے لیے ہر انسان پیسے کمانے کا مختصر راستہ ڈھونڈتا ہے- ایک دوسرے سے آگے نکلنے کی دوڑ میں ہر ممکن کوشش کرتا ہے- ویسے تو رات و رات امیر بننے کے بےشمار طریقے موجود ہیں مگر پرائز بونڈ جلد امیر بننے کا قانونی طریقہ تصور کیا جاتا ہے- اس آرٹیکل کا مقصد پرائز بونڈ کے بارے میں اہم معلومات قارئین تک پہنچانا ہے-
 


پرائز بونڈ - ایک تعارف:
پرائز بونڈ حکومتِ پاکستان کی طرف سے جاری کردہ ایک سیکورٹی سرٹیفیکیٹ ہے جو کہ 100 روپے٬ 200 روپے٬ 750 روپے٬ 15 ہزار روپے٬ 25 ہزار روپے٬ اور 40 ہزار روپے کی مالیت میں جاری کیے جاتے ہیں- یہ بونڈز سیریز میں شائع کیے جاتے ہیں- ہر شخص اپنی جیب کے حساب سے پرائز بونڈ خرید سکتا ہے- جن کی بچت زیادہ ہو وہ زیادہ مالیت کا بونڈ خریدتے ہیں اور جن کی کم ہو وہ کم مالیت کا-

ہر پرائز بونڈ کی قرعہ اندازی تین ماہ کے وقفے سے منعقد ہوتی رہتی ہے مگر اس کا کوئی مخصوص ریٹ نہیں ہوتا- یہ قرعہ اندازی ایک خاص ترتیب سے منعقد ہوتی ہے اور اس کی ہر سیریز کے لیے انعامات کی تعداد بھی مخصوص ہوتی ہے- مثال کے طور پر اگر 200 روپے والے پرائز بونڈ پر 50 کی سیریز چل رہی ہے تو ہر قرعہ اندازی پر پہلے انعام کے لیے 50 فاتحین ہوں گے اور دوسرے انعام کے لیے 250 فاتحین ہوں گے-
 


کونسے پرائز بونڈ قابلِ قبول نہیں؟
وفاقی حکومت کے نوٹیفیکیشن کے مطابق 1500 روپے مالیت وہ پرائز بونڈ جو کہ سلسلہ وار نمبر AW-070001 سے AW-090000 تک ہیں٬ ایسے پرائز بونڈ نہ تو کیش کروائے جاسکتے ہیں اور نہ ہی ان پر لگا ہوا انعام مل سکتا ہے- یہ پرائز بونڈ بتاریخ 19 مئی 2014 سے منسوخ ہوچکے ہیں- (بحوالہ : . F.16(3)GS-I/2004/678 Dated 19th May, 2014.)

پرائز بونڈ کی انعامی رقم حاصل کرنے کا طریقہ:
1250 روپے کی مالیت تک کی انعامی رقم جیتنے کی صورت میں نیشنل سیونگ سینٹر کی کسی بھی برانچ٬ اسٹیٹ بینک یا منظور شدہ کمرشل بینکوں کی برانچوں سے رابطہ کیا جاسکتا ہے- وہ انعامی رقم جو 1250 روپے سے زیادہ ہے وہ صرف اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی شاخوں سے ہی حاصل کی جاسکتی ہیں-

پرائز بونڈ پر لگنے والی انعامی رقم وصول کرنے کے لیے درخواست فارم این ( PB-1) بھرنا لازمی ہے- اس فارم کے ساتھ شناختی کارڈ کی کاپی٬ جیتنے والے پرائز بونڈ کی دستخط شدہ کاپی متعلقہ آفس میں جمع کروائیں-
 


انعامی رقم کب تک وصول کی جاسکتی ہے؟
کسی بھی جیتنے والے پرائز بونڈ پر انعامی رقم نتائج کی تاریخ سے لے کر 6 سال کے عرصے تک حاصل کی جاسکتی ہے- 6 سال کے بعد انعامی رقم جیتنے کا کوئی بھی دعویٰ قابلِ قبول نہیں ہوگا-

انعامی رقم پر لاگو ود ہولڈنگ ٹیکس:
وہ تمام انعامی جو 01 جولائی 2013 تک یا اس کے بعد جیتی جائیں گے ان پر 15 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس لاگو ہوگا-

پرائز بونڈ کے بارے میں مزید معلومات حاصل کرنے کے لیے مندرجہ ذیل لنک پر کلک کیجیے:


Click Here

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
30 Mar, 2016 Total Views: 16915 Print Article Print
NEXT 
Reviews & Comments
Agar ye haram hy to pak gov ye haram kam kyn kr rai hy?
By: Kashi, Lahore on Apr, 29 2016
Reply Reply
0 Like
There is no mention of prize bond of 7500 in this article.
By: Sabir Ali khan, Karachi on Apr, 02 2016
Reply Reply
3 Like
معزز قارئین، اس آرٹیکل کی معلومات اپنی جگہ۔۔۔۔۔ لیکن میں یہ یاد دہانی کروانا اپنا دینی فرض سمجھتا ھوں کہ ھر قسم کے پرائز بانڈز کی خرید و فروخت ناجائز اور ان پر حاصل کی گئی انعامی رقوم حرام ہیں۔۔۔۔۔ کیونکہ یہ انعامات تمام لوگوں سے رقم اکٹھا کر کے ایک یا چند افراد میں تقسیم کر دی جاتی ھے۔۔۔ جو جوئے اور قمار کی ھی ایک شکل ھے۔۔۔۔ اور قرآن مجید میں اس کی سختی سے ممانعت کی گئی ہے۔۔۔

يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا إِنَّمَا الْخَمْرُ وَالْمَيْسِرُ وَالْأَنصَابُ وَالْأَزْلَامُ رِجْسٌ مِّنْ عَمَلِ الشَّيْطَانِ فَاجْتَنِبُوهُ لَعَلَّكُمْ تُفْلِحُونَ ﴿٩٠سورة المائدة ------ اے ایمان والو! بات یہی ہے کہ شراب اور جوا اور تھان اور فال نکالنے کے پانسے کے تیر، یہ سب گندی باتیں، شیطانی کام ہیں ان سے بالکل الگ رہو تاکہ تم فلاح یاب ہو
By: Azam Hameedi, Buraydah on Apr, 02 2016
Reply Reply
8 Like
Bohat se ulma isay halal bhi kehty hain aap prize halal or haram likh kar google per search karen bralevi ulma issy halal qarar de kar is ki zabardast dalil pesh karty hain jab keh deobandi ulma bhi dalil pesh karty hain but mujhe bralevi ulma ki dalil ziada strong lagi hai, un kay nazdik yeh raqam govt of pakistan deti hai so hakumat awam ko jo chahe de dey, Islam iss ki ijazat deta hai, 2nd bat yeh raqam sab logo se jama nahi ki jati balkay hum jo pese jama karwaty hain wo Govt of Pakistan kay account mai save hojate hain agar ap ka prize nahi nikalta to ap kisi bhi waqt kabhi bhi wo bond wapis de kar hakumat se apny pese wapis le sakte hain so mere khiyal se yeh aik facility hai jese bap jo marzi apny bacho ko chahe de dey, riyasat bhi bap ki tara hoti hai........
By: Muhammad Shahzaib Siddiqui, Islamabad on Nov, 18 2016
2 Like
nice information........
By: azeem, paklahore on Mar, 30 2016
Reply Reply
1 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
Who doesn’t want to become rich? In this fast moving world, every single soul is searching ways to be successful and rich within short period of time. Although there are many ways to do so, Prize Bond is categorized as the most authentic legal way of reaching heights. This article deals with the basic understanding of prize bond and information that most people are unaware of.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB