مفت میں جنت ... ایک سبق آموز نصیحت*

(Asif Jaleel, All Cities)

ایک بوڑھے آدمی نے اپنے پوتے سے کہا : اے میرے بچے! تم جنت مفت میں حاصل کر سکتے ہو مگر جہنم میں جانے کے لئے مال و دولت خرچ کرنا پڑتا ہے.
بچے نے سوال کیا : دادا جان! وه کیسے؟
دادا نے جواب دیا : دیکھو!
جوا کھیلنے کے لئے پیسے لگانے پڑتے ہیں.
شراب پینے کے لئے پیسے دینے پڑتے ہیں.
سگریٹ پینے کے لئے پیسہ خرچ کرنا پڑتا ہے.
گانے بجانے کے لئے پیسہ خرچ کرنا پڑتا ہے.
عیاشی کے لئے سیر و سیاحت کرنا ہو تو پیسے لگانے پڑتے ہیں.

مگر اے میرے بیٹے!
جنت کے لئے کوئی روپیہ پیسہ نہیں خرچ کرنا پڑتا چنانچہ دیکھو:
نماز پڑھنے کے لئے کوئی پیسہ نہیں دینا پڑتا.
روزہ ركھنے كے ليے کوئی پیسہ نہیں خرچ کرنا پڑتا.
استغفار اور دیگر ذکر و اذکار کے لئے کوئی پیسے نہیں لگتے.
نگاہ نیچی رکھنے میں کوئی پیسہ نہیں لگتا ...
میرے بیٹے! اب تم خود فیصلہ کرو: مال و دولت، روپیہ پیسہ خرچ کر کے جہنم خریدنا چاہتے ہو یا مفت کی نیکیاں کر کے مفت میں جنت حاصل کرنا چاہتے ہو ؟؟؟

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
09 Sep, 2017 Total Views: 346 Print Article Print
NEXT 
About the Author: Asif Jaleel

WARNING: I have an attitude and I know how to use it!.

میں عزیز ہوں سب کو پر ضرورتوں کے لئے
.. View More

Read More Articles by Asif Jaleel: 100 Articles with 38148 views »
Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB