ریمنڈ ڈیوس امریکی جاسوس یا سفارتکار

(Naghma Habib, Peshawar)

ایک امریکی ریمنڈ ڈیوس نے 27 جنوری کو مزنگ لاہور کے قرطبہ چوک میں دو پاکستانیوں پر فائرنگ کر کے انہیں ہلاک کردیا اور ایک شخص کو اسکی مدد گار گاڑی نے کچل ڈالا امریکہ کیلئے یہ کوئی نئی بات نہیں وہ عرصے سے پاکستان میں یہ کررہا ہے۔ خود کش حملوں میں بھی امریکہ زور و شور سے ملوث ہے اور ڈرون حملے تو جیسے امریکہ کے فرائض میں شامل ہیں کہ کیے جاؤ اور پاکستانیوں کو مارے جاؤ یقیناً کچھ دہشت گرد بھی مرے ہونگے لیکن کیا ننھے بچے بھی دہشت گرد ہیں جو ان حملوں میں مر جا تے ہیں ۔ یہ سب تو اب معمول ہے لیکن جو کچھ ابھی تک خلاف تو قع ہوا جس کو کم از کم امریکہ سوچ بھی نہیں سکتا تھا وہ ریمنڈ ڈیوس کی گرفتاری اور تاحال اسکا جیل میں رہنا ہے یہ اور بات ہے کہ اطلاعات کے مطابق جیل میں بھی اس کے ساتھ خاصا وی آئی پی برتاؤ کیا جا رہا ہے اور اسے ہر قسم کی سہولت دی جا رہی ہے اور وہ جیل میں بھی سپر پاور ملک کا باشندہ ہونے کی نخوت میں مبتلا ہے تبھی تو اپنا پسندیدہ کھانا نہ ملنے کی شکایت کر رہا ہے جو مہمان خاص بھی نہیں کرتے اور امریکہ بھی اس کے لئے استثنیٰ مانگ رہا ہے بلکہ دھونس جما کر اسکی رہائی کا مطالبہ کر رہا ہے اور ویانا کنونشن کا سہارا لینے کی کوشش کر رہا ہے ۔ جبکہ واردات کے پہلے ہی دن سے یہ بات کہی جا رہی تھی کہ ریمنڈ ڈیوس کوئی سفارتکار نہیں ہے بلکہ امریکہ کا جاسوس ہے جو خفیہ قسم کی سرگرمیوں میں ملوث تھا اور یہ بھی کہ وہ لاہور میں ریکروٹنگ کی ڈیوٹی بھی کر رہا تھا ۔ اس سے مختلف قسم کی مشکوک اشیا بھی برآمد ہوئیں اور سب سے بڑی بات تو یہ کہ ریمنڈ ڈیوس اسلحہ لے کر لاہور کے مصروف ترین علاقے میں کیوں گھوم رہا تھا جبکہ متعلقہ تھانے کو اس کی خبر نہ تھی جو کہ سفارتکار ہونے کی صورت میں ہونی چاہئے تھی۔ اب جبکہ امریکی میڈیا نے بھی اس راز کو طشت از بام کر دیا ہے کہ ریمنڈ ڈیوس سفارتکار نہیں بلکہ سی آئی اے کا با قاعدہ ایجنٹ تھا اور لاہور کو اپنا مرکز بناکر پاکستان مخالف سر گرمیوں میں ملوث تھا۔ جس کا ثبوت اس سے برآمد ہونے والی دینی درسگاہوں اور مدرسوں وغیرہ کی تصاویر تھیں لیکن امریکہ ڈھٹائی سے اسے سفارتکار ثابت کرنے پر تلا ہوا تھا اور اب امریکی میڈیا نے جس طرح بھانڈا پھو ڑا ہے تو اس سے اندازہ ہورہا ہے کہ اس شخص کیلئے امریکی وزارت خارجہ سے لے کر صدر امر یکہ تک ہر ایک کیوں بلبلا اٹھا کیا ڈیوس سے کچھ اور بھی خفیہ راز وابستہ ہیں جنہوں نے امر یکہ کو خوفزدہ کر رکھا ہے؟ یہ کہنا کہ امریکہ ریمنڈ ڈیوس کو بچانے کیلئے کوئی بھی اقدام بے خوف کر سکتا ہے درست نہیں کیو نکہ امر یکہ کے جتنے مفادات پاکستان سے وابستہ ہیں وہ ان کو داؤ پر نہیں لگا سکتا اس کو پاکستان کی اس سے کہیں زیادہ ضرورت ہے جتنی کہ پاکستان کو اس کی ہے۔ امریکہ افغانستان میں جس بری طرح پھنسا ہوا ہے اور کسی قدر با عزت واپسی کے راستے کی تلاش میں ہے وہ جانتا ہے کہ پاکستان کی مدد کے بغیر وہ افغا نستان میں اور دہشت گردی کے خلاف جنگ جیتنا تو درکنار جا ری بھی نہیں رکھ سکتا اور یہی وقت ہے کہ حکومت پاکستان ایک مضبوط مؤقف اختیار کرتے ہوئے ریمنڈ ڈیوس کے معاملے کو غیرت قومی کے مطابق برتے اور امریکہ کے دباؤ کو کسی صورت قبول نہ کرے۔ یہ حقیقت دنیا کی تاریخ کا المناک باب ہے کہ امریکہ کسی کا دوست نہیں ہے پوری دنیا کو اپنی جاگیر سمجھتے ہوئے اسکے باشندے اور کارندے جہاں اور جس وقت چاہیں اپنی کاروائیا ں کرنے سے نہیں کتراتے اور پاکستان کی بری قسمت تو یہ بھی ہے کہ اسکے حکمران امریکہ کے سامنے جھک جاتے ہیں اور عوام کی توقعات اور خواہشات کے با لکل برعکس امریکی کا روائیوں پر احتجاج تو درکنار ناگواری تک کا اظہار نہیں کیا جاتا اور مسلسل اپنے عوام اور سیکیورٹی فورسز کی قربانی دی جا رہی ہے۔ ایک ایسے دوست کیلئے جو ایک بہت بڑا دشمن ہے اور جس نے ہمارے معاشرے کو امن سے محروم کر رکھا ہے۔ کیونکہ اسے پوری دنیا کے امن کی کوئی فکر نہیں لیکن مزے کی بات یہ ہے کہ وہ خود کو امن کا بہت بڑا داعی کہتا ہے۔ اسکی دو رخی کا یہ عالم ہے کہ جہاں جمہوریت ہے وہاں اسکو عام آدمی خطرے میں نظر آتا ہے اور جہاں آمریت ہے وہاں جمہوریت خطرے میں محسوس ہوتی ہے یوں وہ دنیا کے کسی بھی ملک میں مداخلت کا بھونڈا سہی جواز ڈھونڈتا ہے اور وہ خود کو اس کا حقدار سمجھتا ہے اس نے اپنے کارندے پوری دنیا کے امن کو تہہ و بالا کرنے کو چھوڑ رکھے ہیں جو جس وقت چاہیں وہاں کے امن پر دھاوا بول دیتے ہیں اور امن کی بحالی کے بہانے اس ملک میں گھس جاتے ہیں لیکن امن کی بحالی تو ایک طرف خون کی ندیاں بہا دی جاتی ہیں پاکستان میں امریکہ نے جس طرح دہشت گردی پھیلا رکھی ہے وہ اس کا ثبوت ہے اور اس وقت اس نے اپنے ایک قاتل شہری کو ہر صورت چھڑانے کے لئے جس طرح ایڑی چوٹی کا زور لگا رکھا ہے اور جس استثنیٰ کا مطالبہ کر رہا ہے وہ در اصل ایک ریمنڈ ڈیوس کے لئے نہیں بلکہ وہ اسے اپنے ہر شہری کا حق سمجھتا ہے۔ ڈیوس نے قتل کے جرم کا ارتکاب کیا اور اسے صرف اس لئے معا فی یا استثنیٰ نہیں ملنا چاہیے کہ وہ امریکی باشندہ ہے اور پاکستانی عدالتوں کو آزادی سے کسی خوف کے بغیر فیصلہ کرتے ہوئے امریکہ کو یہ احساس دلا دینا چاہیے کہ پاکستان ایک آزاد ملک ہے اور کسی امریکی کو مزید یہ حق نہیں دیا جا سکتا کہ وہ پاکستانیوں کے خون سے ہولی کھیلے اور ساتھ ہی امریکہ کو ریمنڈ ڈیوس کی طرح دیگر جاسوسوں اور قاتلوں کو واپس امریکہ بلا لینا چاہیے۔ اس نے اپنے ہی رچا ئے ہوئے ڈرامے یعنی ٹوئن ٹاور میں مارے جانے والے چند ہزار امریکیوں اور یہودیوں کے بدلے بے شمار مسلمانوں کا خون بہا دیا ہے بلکہ اس کی طرف واجب الادا خون کا اگر حساب لیا جائے تو مزید کئی ٹوئن ٹاورز گرانے ہونگے پھر بھی مشکل ہے کہ خون کے بدلے خون پورا ہوسکے۔ اس موقعے پر ہماری حکومت کو شدت سے امریکہ کو یہ احساس دلانا ہوگا کہ اب پاکستان مزید امریکی مفادات کے تحفظ کا متحمل نہیں ہو سکتا اس عمل کیلئے عوام تو تیار ہیں لیکن حکومت کو انتہائی ثابت قدمی کا ثبوت دینا ہوگا۔
Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
25 Feb, 2011 Total Views: 1756 Print Article Print
NEXT 
About the Author: Naghma Habib

Read More Articles by Naghma Habib: 414 Articles with 206614 views »

Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
Reviews & Comments
sub theek hay mugar hakoomat or sabit qadmi ki ummeed bohat sedhay hain hum loog. doodh ka jala too chag ko bhee phookn phookn kay peeta hay.
By: adil khan, karachi on Mar, 19 2011
Reply Reply
0 Like
جاسوس
By: Shahid Bashir, Fasialabad on Mar, 08 2011
Reply Reply
0 Like
My brothers and sisters, my previous comments on Raymond Davis article may have been taken and branded as the pro Pashtuns thoughts, which is not the case. My point of view in this regards is that we all are Pakistanis and we should be treated in equal way as we all belong to Pakistan and Pakistan belongs to us.
Pashtuns are true citizens of Pakistan and served the country the way any other cast or creed would do and still are doing it. We can count the numbers in armed forces and in civil administration; they all are country’s loving and useful instruments who are doing their share to promote well being.
Yes, we all are against those elements that are present in Pashtun society who are anti Pakistan and harboring the elements in their rank and file, all those who are getting foreign aid and training to destabilize Pakistan and issue decrees to pollute the young minds who are the back bone of the very structure of any society upon which the country rely.
The enemies of Pakistan exactly knows what segment of the country is to be used against its own people to derail the progress and make a divide in the country’s bonded majority in shape of different casts and language and provinces. The most useful instrument in the hands of enemy is the religion; Islam. They twist it to achieve its own goals and objectives, they are also using the persons in government machinery who are Mir sadiqs and Mir Jaffars coupled with sectarian fragile issues to accelerate the destabilizing process. These are the hard facts which a true and country loving citizen must understand.
By: zafar masood, nowshera, KPK on Mar, 01 2011
Reply Reply
0 Like
Once Davis is roaming in the streets of Lahore where are the heavily paid agencies, where is the police, where was the FIA record, where was the foreign office records, how a man with a strange face and modern gadgetry zooming in the capital of Punjab. Are we blind or deaf? yes we are; is the blood of tribal man so cheap that he is slaughtered like a goat and sheep in the mountains of Waziristan; is he not the true citizen of Pakistan who went to kashmir to fight for Pakistan to liberate Kashmir from Hindo Bannia clutches, is he the same man who fought for US to liberate Afghan from hammer and sickle. Is he the same man who becomes suicide bomber by motivated by anti Pakistan elements. Is he the same man who does not get the flood aid which comes in huge sum and that goes to the corrupt. Is he the same man who being well educated, well built, hand some sits in line to get aid left by vultures of our society. Yes he was fooled so many time but can not understand the meanness of his masters who are from his own clan driven by our corrupt system. We are the nation who prays for the miracles but does not move ahead by its own. Shame on us as we blame our masters; USA because they know we are so cheap and disloyal to our religion and country, no blames to US as she has to act like this to fulfill her desires but we are ready to sell our mothers if need arises to get benefits. So no blame to our so called leadership, as we are so we are pinned upon leaders or system like this. There will be many more Davis and they are present more than 200; where are our our Nation protection filters who monitor the undesired person movements ? We should pray to God to excuse our follies we done to our Nation and as a whole to our Religion as we sold so many to USA and thought this menace will not knock on our door but it has knocked heavily; let me tell you are we aware of the fact the all those killed in terrorists acts their widows and orphans are at which state, how many will become beggars, God forbid prostitutes in our cruel society, no body knows and cares, Please wake up Pakistan
By: zafar, Nowshera, KPK on Mar, 01 2011
Reply Reply
0 Like
This is not the only case, number of other CIA agents are free roaming in Pakistan.

Well done Naghma behan, keep on exposing such individuals.
By: Anwar Husain, Wana, South Waziristan on Mar, 01 2011
Reply Reply
0 Like
AOA, when Genghis khan invaded the Baghdad, Iraq they were at the peak of intellectual heights as today our media is touching every issue with no actions for solid change of the nation. We can not win the nation by just glamorous anchor person charm and twisted words which are already decided and done behind camera. We need a change at every level starting from top to bottom as we sail in a same boat whether a common man or privileged one ; showing dishonesty to our religion and towards our country.
By: zafar, Nowshera, KPK on Mar, 01 2011
Reply Reply
0 Like
Real identification of Raymond Davis?
His real name is Eric Prince.
He is the CEO of Black Water & Zee Worldwide
Dyan Corporation & many other security agencies .
Before holding this position he joined special service group of USA Army for 10 years.
He is
1-Commando.
2-Sharp Shooter.
3-GPS Explosive device expert.
4-Directly assisting Obama for War on terror.
5-He was given the task to select the targets for Drone Attacks on behalf of Pakistan Government.
By: *Rizwana Khan*, ***Karachi*** on Feb, 28 2011
Reply Reply
0 Like
جاسوس
By: mastiheart, Islamabad on Feb, 28 2011
Reply Reply
0 Like
he is the agent of black water & he is ****
By: Raheel islam, Sangla hill on Feb, 28 2011
Reply Reply
0 Like
He is an agent of Blackwater(x.z)just spy.
By: *Rizwana Khan*, karachi on Feb, 27 2011
Reply Reply
0 Like
ریمنڈ ڈیوس ایک دہشتگرد, قاتل اور جاسوس ہے
By: Abdullah Khan, Islamabad on Feb, 27 2011
Reply Reply
0 Like
جاسوس
By: Shaheer Ullah Khan, Islamabad on Feb, 26 2011
Reply Reply
0 Like
جاسوس
By: Sameea Zeb, Quetta on Feb, 26 2011
Reply Reply
0 Like
جاسوس
By: Habib Ullah Khan, Swat, Pakistan on Feb, 26 2011
Reply Reply
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB