"تلخیاں"

(ام بلال, ریاض)

¶ بچپن میں اگر ماں مر جائے تو آسمان روتا ہے۔اور باپ مر جائے تو جہان ساتھ چھوڑ دیتا ہے۔

¶ زندگی اور موت ریل کی پٹریوں کی مانند ہیں۔ الگ رہ کر بھی ساتھ ساتھ چلتی ہیں۔ مگر جب مل جائیں تو جدا ہو جاتی ہیں۔

¶ کوئ بچہ اپنی مرضی سے کسی فقیر کے ہاں پیدا نہیں ہوتا۔ مگر امیر اپنی پیدائش کو بھی اپنا حق سمجھتا ہے۔

¶ لڑکی کو پیدا کرنے والا رب ہے اور اس کی پیدائش پر غم کرنے والا کم ظرف ہے۔

¶ بھوک سے مر جانے والا ہر کسی کو نظر آتا ہے مگر جو شرم سے مر جاتا ہے اس کو کوئی نہیں جانتا۔

¶ غصے کی آگ دماغ سے داخل ہو کر زبان سے نکلتی ہے۔

¶ اللّٰہ انسان کی بے شمار غلطیوں کو سچی توبہ سے معاف کر دیتا ہے مگر وہی انسان کسی کی زرا سی غلطی پر اسکا گریبان چاک کر دیتا ہے۔

¶ گھڑی وقت بتانے کا نہیں دراصل وقت گزر جانے کا پتہ دیتی ہے۔

¶ کسی غریب کی کمائی میں اسکا خون پسینہ شامل ہوتا ہے۔لیکن اکثر دولت مندوں کی کمائی میں دوسروں کا خون پسینہ ہوتا ہے۔

¶ شادی ایک جوا ہے جسکی ہارجیت میاں بیوی کے ہاتھوں میں ہوتی ہے۔

¶ رب ایک ساتھ سب بندوں کی سنتا ہے اور ہم سب ملکر بھی ایک رب کی نہیں سنتے ہیں

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
05 Jan, 2018 Total Views: 72 Print Article Print
NEXT 
About the Author: ام بلال

Read More Articles by ام بلال: 8 Articles with 1319 views »

Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
Reviews & Comments
بہت خوب حقیقت کی تلخیاں پڑھکر مزا آگیاحق بات ھمیشہ کڑوی ھوتی ھے اور بہت کم لوگ حق گو ھوتے ھیں کڑوی حقیقت کو بڑے اچھے انداز میں پیش کیا ہے
By: Fakhra, Karachi on Jan, 10 2018
Reply Reply
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB