Home » Blogs » مسئلہ بلوچستان: امریکہ دوست یا دشمن؟



This survey is purely on scientific calculation basis, One vote is based on one person/PC.

مسئلہ بلوچستان: امریکہ دوست یا دشمن؟

امریکی ایوانِ نمائندگان میں حال ہی میں ایک قرارداد جمع کروائی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بلوچ عوام کو اپنے لیے آزاد ملک کا حق حاصل ہے-

پاکستان٬ جس نے گزشتہ گیارہ سال سے امریکی جنگ کو اپنی جنگ بنائے رکھا- اپنی معیشت سے لے کر ہزاروں افراد کی جان کی قربانی بھی دے ڈالی- اس سب کے باوجود آج پاکستان کو یہ دن دیکھنے پڑ رہے ہیں کہ پاکستان کے سب سے بڑے صوبے بلوچستان میں علیحدگی کی تحریک کو ہوا دینے میں آج امریکہ پیش پیش ہے-

امریکی سینیٹر کے اس اقدام کو پاکستان کے عوام اپنے ملک کے خلاف کھلم کھلا دشمنی کی ایک واضح مثال سمجھتے ہیں- جو ہمارے حکمرانوں کو سمجھانے کے لیے کافی ہے کہ امریکہ٬ ہمارا کھلا دشمن ہے ناکہ ہمدرد دوست

Reviews & Comments

Post your Comments Select Language:    
Name:
Email Address:
Your email address won't be shared (Privacy Policy)
City:
Type your Comments / Review in the space below.
 
according to international law. any state can not interfere in the other matters. but international law also accept self determination of every nation who are suffering from 6 decade. our motherland Baluchistan is a rich land but still we are deprive from every thing.. even our basic right like to live. when every America and other country talk about Pakistani atrocities people of Pakistan reacted on that they are violating our sovereignty. we know that America is not a friend of any one but it is doing it for it interest. but what Pakistan do for us?? what people of Pakistan do for us?? we are suffering all these atrocities from 6 decade alone koi haal bi nae pouchta par sawal karta hay America se.. agar itna he khayal hay balochistan ka or balochistan kay longo ka tou jaho press club par.. koi jayaga nae sub baatain kartay hay
ajoi baloch, zhob Monday, January 07 2013
پاکستان میں امریکی کردار محترم يوسف، السلام عليکم، آپ نے بہت سے ايسے مسائل پر بات کی ہيں جو زیر بحث موضوع کے دائرے سے باہر ہيں۔ تاہم، ہم ان تمام مسائل سے کسی دوسرے مناسب وقت پر نمٹ سکتے ہیں ۔ میں کوشش کروں گا کہ پاکستان میں امریکی کردار کے حوالے سے آپ کی غلط تاثر کو مخاطب کرسکوں۔ ميں بتاتا چلوں کہ پاکستان ميں کچھ ايسے سازشی اور بے بنياد نظريات کا پرچار کرنے والے سازش فروش موجود ہيں جوبیکار میں پاکستان کی جانب امریکی مخلصانہ عزم اور کی گئی کوششوں کو نظر انداز کرتے ہيں۔ مزید برآں، ان سازش فروشوں نے اپنے بنیادی نظریات کو ثابت کرنے کے لئے کبھی بھی ثبوت اور حقائق پیش نہیں کیے. پاکستان میں کچھ بھی جب غلط ہو جاتا ہے تو بہت آسانی سے امریکہ اور بعض نامعلوم غیر ملکی عناصر پر اس کا الزام لگا ديا جاتا ہے۔ اس طرح کے الزامات سے واحد فائدہ اٹھانے والے لوگ صرف وہ انتہا پسند عناصر ہيں جو پاکستان میں مطلق استثنی کے ساتھ معصوم لوگوں کے خلاف دہشتگردی کے کام میں مصروف عمل ہیں۔ یہ بنیاد پرست تنظیميں بلا امتیاز خواتین اور بچوں سمیت معصوم لوگوں کو مار رہے ہیں. ان لوگوں نے پاکستان کے پرامن معاشرے کو تباہ کرديا ہيں۔ وقت کی ايک اہم ضرورت ہے کہ ہم دونوں ممالک اپنے باہمی اختلافات کو پس پشت ڈال کر ايک دوسرے پر الزامات لگانا چھوڑ ديں جو خطے میں ہميں انتہا پسندی کی لعنت کو ختم کرنے کے ہمارے اپنے مشترکہ مقاصد کو حاصل کرنے سے روک رہے ہيں۔ یہ ذکرکرنا ضروری ہے کہ پاکستان میں امریکی طویل جاری امریکی امداد کا مقصد پاکستان اور اس کے اداروں کو پاکستانی عوام کے لئے ایک خوشحال اور ترقيافتہ مستقبل بنانے میں مدد کرنے کے لئے ہے۔ ہم کسی دوسرے ایجنڈے پر کرفرما نہیں ہیں جیسا کہ بعض تبصرے اس طرف اشارہ دے رہے ہيں۔ آخر میں، ميں دوہرانا چاہتا ہوں کہ ایک مستحکم اور فعال پاکستان امریکہ کے بہترین مفاد میں ہے۔ ہم نے ہمیشہ يہ امر برقرار رکھا ہے کہ پاکستان خطے کا ایک اہم ترين ملک ہے اور اس کے استحکام ہی سے خطے میں استحکام عمل میں آسکتا ہے۔ ہم کسی اور ايسے ایجنڈے پر کس طرح عمل پيرا ہوسکتے ہيں جو پاکستان کو غیر مستحکم بنائےاور انتہا پسندی کو ختم کرنے اور خطے میں پائیدار امن کو یقینی بنانے کے ليۓ ہمارے طویل المدتی مقاصد کو خطرے میں ڈال سکتے ہیں؟
Tashfin Khan, Washington, DC Monday, June 25 2012
ji bilkul america ko koi haq hasal naen hai doosron kae mulak maen dakhal andazi ka, hum kis tara aisae mulak aapna dosaat samaj sakte haen

m,yousafg, lahore Monday, June 18 2012
kissi be mulak kae androoni moaamlat maen modkhlat karna bain ul akwami kanoon kae khalaf hai, AMERICAN GOVERNMENT ko ais ka khiyal rakhna chaye.ais maen koi shak na hai keh USA aaj aik super power hai,so ais per ais layhaz sae zeyada zoomawari aati hai keh woh bain ul akwami kanoon ka khiyal rakhe. USA nae jitna paisa VAITNAM,KORYA, IRAQ AUR AAB AFGHANISTAN maen jangoon per karach kia hai aur jis ka koi aachcha tasoor be kaim naen hoowa, aur deshat gardi be kam naen hooi,AUR AAGAR YAHEE PAISA IN MULKOON MAEN FALAH O BABOOD KAE WASTE KHARACH KIA JATA TU AAJ AMERICAN GOVERNMENT KI BOHAAT TAREEF HO RAHI HOTI Allah hafiz
m yousaf, lahore Sunday, June 17 2012
بلوچستان کا مسئلہ - اور امریکی موقف

محترم قارئین

اسلام عليکم

اس کا ذکر کرنا نہايت ضروری ہے کہ مصنف امریکی کانگریس اور اس کے قانون سازی کے عمل کے متعلق واضح طور پر کوئی بھی سمجھ نہیں رکھتا، ان کی يہ ناسمجھی بلوچستان کے مسئلہ پر امریکہ کے خلاف پاکستانی عوام کے ذہنوں میں انکے مبینہ کردار کے متعلق بےجا شکوک و شبہات پیدا کر رہی ہيں.
ميں يہ واضح کرنا چاہتا ہوں کہ کانگریس میں ایک منتخب رکن کی طرف سے کوئی بھی بیان یا ایک بل پیش کرنا امریکی سرکاری پالیسی کو ظاہر نہيں کرتا ۔ کیا پاکستانی پارلیمنٹ کے ایک رکن کی طرف سے ہر بیان سرکاری پاکستانی پالیسی کی عکاسی کرتا ہے؟

کانگریس اور سینیٹ کے منتخب ارکان کی طرف سے بیانات ان کے ذاتی خیالات اور رائے پر مبنی ہوتے ہيں اور کسی صورت ميں امریکی حکومت کے سرکاری موقف کی ترجمانی نہيں کرتے ۔ کسی صورت ميں کانگرس مين روھراباچر وائٹ ہاؤس یا امریکی حکومت کی سرکاری پوزیشن کی نمائندگی نہيں کرتا ۔ اس کے علاوہ، کانگریس کے معمول میں اس قسم کے کئی غیر ملکی معاملات اور موضوعات زیرسماعت آتے ہيں ۔ ان سماعتوں سے ضروری نہیں ہے کہ امریکی حکومت کسی ايک نقطہ نظر کی توثیق کرتی ہے۔ ميں دو ٹوک الفاظ ميں کہنا چاہتا ہوں، کہ امريکہ سنجید گی سے پاکستان کے اتحاد اور استحکام کی حمایت کرتا ہے اور یہ کہ بلوچستان کو پاکستان کے حصے کے طور پر قائم رکھنے کے لے خواہاں ہے۔

اس کے علاوہ، امریکی انتظامیہ بلوچستان کے مسئلے پر ایک بہت واضح موقف رکھتی ہے ۔ بلاشبہ امریکی حکومت بلوچستان میں سنگین انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے کئی رپورٹس کے بارے میں کافی فکرمند ہےاورامريکی حکومت ان تمام سنگين انسانی حقوق کی خلاف ورزيوں کے ان الزامات کو کافی سنجیدگی سے ليتی ہے۔ ليکن امريکی انتظاميہ اس پربھی پختہ یقین رکھتی ہے کہ پاکستانی حکومت کی يہ بنیادی ذمہ داری ہے کہ ان مسائل کو تمام اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ پرامن بات چیت کےذریعے حل کرنے کی ممکن کوشش کريں۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ ایک مضبوط، مستحکم اور متحد پاکستان امریکہ کے بہترین اسٹریٹجک مفاد میں ہے ۔
Tashfin Khan, Washington DC Friday, May 04 2012
امریکہ صرف انڈیا کا ہوسکتا ہے پاکستان کا نہیں
qasim raza , karachi Thursday, March 29 2012
ہمارے پاکستان کو کچھ نہیں ہوتا۔ امریکہ ہمارا کھلا دشمن ہے۔ جس نے پاکستان کی طرف آنکھ اٹھا کر بھی دیکھا اس کی آنکھیں نکال لیں گے ہم۔ اگر امریکہ شکست خوردہ ہے۔ افغانستان میں بری طرح شکست کھا چکا ہے۔ ہمیں اس بات سے پریشان نہیں ہونا چاہیے کہ بلوچستان علیحدہ ہو جائے گا۔ بلکہ ٹکڑے امریکہ اور انڈیا کے ہوں گے۔ انشااللہ ۔ جیسے آج سے کئی سال پہلے روس کے ہوئے تھے۔ اور یہ وقت تمام صوبائی، لسانی اور گروہی تعصبات سے پاک ہو کر متحد ہونے کا وقت ہے۔ ہمیں کوئی نقصان نہیں پہنچا سکتا۔ جیسے قائداعظم کا بیان ہے۔ “ہم بلوچی، سندھی، پنجابی اور نہ پٹھان ہیں بلکہ ہم سب تو مسلمان ہیں“۔ اس لیے صرف مسلمان بن کو سوچیں ہمارا پاکستان تا قیامت قائم رہے گا۔ انشااللہ پاکستان زندہ باد قائداعظم پائندہ باد
Rafiq Ahmed, Karachi Wednesday, March 28 2012
America is an evil and enemy of all world particularly muslims.yahudi wa nasara kabhi kabhi musalmano kay dost nai ho saktay.
zia ur rehman shah, peshawar Wednesday, March 28 2012
52 states of USA also have the same right.
safeer, barazai Wednesday, March 28 2012
امرئکہ کبھی بھی پاکستان کا دوست نھیں ہو سکتا۔وہ ھر جگہ اپنا مفاد دیکھتا ہے۔
Nabeel, Lahore Wednesday, March 28 2012
we have lost fifty thousands peaples and soldiers and more then three hondreds billions dollars of damaged to our country by nato and our leaders and minsters still want to open nato supply lines who is responsibles and who going to pay such of huge lost with nato wars our seventy percent peaples became very poor GDP less then one dollar per day with nato wars now every pakistani is clever he is watching what his leaders and minsters are doing for him and the country nato and all the leaders and minsters are accountable and responsibles for their actions no body above the law not even america sombody have to pay such of huge lost
nasir, turbat Wednesday, March 28 2012
AOA to all pakistan.....
amercia is never pakistan friend he is a enimey of all muslim counteies
M.Idrees Minhas, Bagh AJK Wednesday, March 28 2012
Balochistan pakistan ka aik ahm sooba hai jis ko Gen. Pervez Musharaf k dour e hukomat m na sirf nazar andaz kia gya bal k balochistan k aham tareen leaders ko b qatal kya gya jis se balochistan waloon ki izat e nafs majrooh hui mojooda hukomat ko chahiya k balochistan ko marat k sath sath whan aman zaroor qaim karay.

thanks
Arif Mustafa Soomro, Karachi Wednesday, March 28 2012
baluchictan is our province and balouch are pakistnai and love the pakistan . amarica and india are not faire with pakistan . in 1971 these are problem create to pakistan and make bangladesh, but our political leaders are not sensear with pakistani people and our pakistan he is agent of amirica and india ,pakistan zindabad,paindabad
muhammad shafiq, karachi Tuesday, March 27 2012
america is not safe state now because they have lots of drugs mafia and proxy groups racial groups and they are fighting each others theirs crimes rate is very high even some of their owen peoples against the state best thing world should help them divide the state otherwise its nuclear state and their is lots of peaple like timothy mcveigh oklahoma bomber who can blow their owen state up its danger for the world
afzal, gilgit Tuesday, March 27 2012
70% peaples of the all provencies of pakistan they are very poor not just balochistan because of dictators landlords and nawabs which are imposed by american and west europeans on us these landlords and nawabs they them self liveing lux life and they used poor peaples for their owen purpose In india and east pakistan they get rid with landlords and nawabs because they are american and europeans spy agents they never help pakistan to be establishd they eat and sleep in pakistan but they are traitors of their owen country dont trust them if we came in power we going to put rope in every bodys neck because 50 thousand peaples killed and billions dollars damaged fronts of us who is responsible its time for us we also get rid with them and make pakistan islami and real democratic state and jihad against corruptions so every pakistani can have better life
riaz, chaman Monday, March 26 2012
MERE PAKISTANI DOSTO KEYA TUM SAB MUJE MERE MASAIL KA HALL BAATA SAKTE HO K JAAB SE PAKISTAN BANA IS WAQT SE AJJ TAAK TUM KO YE MALOOM HA K BALOCHETAN KE DEYAT ME SCHOOL HA KEYA HOSPITAL HA KEYA IN LOGO KE PASS NOKARI HA YEHA TAAK KE AB TAAK BEJLI KI SAOOLAT NA HO SAKI NA GESS JO ISI SOBE SE HOKAR SAB SOBE ME MELTI HA MAGARR BALOCISTAN KI ORAT LAKARI JALATI HA PAKISTAN NE IS SOBE KO KEYA DEYA AGARR AJ BALOCH KOOM APNA HAAQ MANG RAYE HA TO BELKOL HAAQ PAR HA AGAR JES KO ITARAZ HA TO JA KAR IN LOGO KE SATH 1 2 DIN RAYE TO BAAT KARE TUMARA PASS BEJLI 3 GANTE NA HO TUM PAR KEYA HOTA A ZARA SOCHO
ek anda baloch, GAWADAR Sunday, March 25 2012
He is an enemy of pakistan
M.Ansar, Hafizabad Sunday, March 25 2012
حیرت ھے کہ بلوچ سرداروں اور نوابوں کی اولادیں بھی بلوچوں کو ابھی تک اپنا غلام سمجھتی ھیں جب کہ اس کے بر عکس عام بلوچ اپنے آپ کو آزاد تصور کرتےھیں الیکشن میں حصہ لیتے ھیں اپنی حکومت منتخب کرتے ھیں یہ ان کی ایک الگ مجبوری ھے کہ ان کے سامنے کوئی اوران کی پسند امید وار نھیں ھوتا پھر بھی انھیں میں سے کسی کم ظالم کا انتخاب کرتے ھیں
md yaqoob, Jeddah k S A Sunday, March 25 2012
our muslim leaders are brainwashed mr ban ki moon UN and mr yukiya amano IAEA they are spying for usa israel and western countries dont trust them
ali, wana Saturday, March 24 2012
Displaying results 1-20 (of 144)
Page:1 - 2 - 3 - 4 - 5 - 6 - 7 - 8First « Back · Next » Last