غیر کی خاطر سہی
Poet: UA
By: UA, Lahore

غیر کی خاطِر سہی وہ مسکرائے ہیں
مجھے خوشی ہوئی وہ مسکرائے ہیں

اداسی کی جگہ مسکان رخِ زیبا پر
کِھلی کِھلی نظر آئی وہ مسکرائے ہیں

نہیں مجھ سے مِلی تو کیا ہوا مِلی تو ہے
نصیب سے خوشی آئی وہ مسکرائے ہیں

سدا قائم رہے مسکان انکی آنکھوں میں
دعا لبوں پہ ہے آئی وہ مسکرائے ہیں

غیر کی خاطِر سہی وہ مسکرائے ہیں
مجھے خوشی ہوئی وہ مسکرائے ہیں

Rate it: Views: 22 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 19 Oct, 2017
About the Author: uzma ahmad

sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More

Visit 2415 Other Poetries by uzma ahmad »
 Reviews & Comments
Good tere khushi mere khushi
By: Zubair, Bahawalnagar on Nov, 18 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.