رکھتی تھی جس کے ڈر سے میں خود کو سنبھال کے
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

رکھتی تھی جس کے ڈر سے میں خود کو سنبھال کے
وہ چل دیا ہے پھر مجھے مشکل میں ڈال کے

آنکھوں میں تیری یاد کا دریا نہیں رہا
موتی ہیں میری آنکھ میں حزن و ملال کے

دل کی اداؤں سے ابھی واقف نہیں ہے وہ
قصے سنا رہا ہے جو حسن و جمال کے

کیسے حصارِ ذات سے باہر وہ آئے گا
مجھ کو وہ بزمِ یار سے باہر نکال کے

ھر شہر شہر پیار کے دربار بن گئے
چرچے ہوئے جو چار سو میری دھمال کے

جب چاہا عشق ذات کو بھی زیر کر لیا
وشمہ ہماری آنکھ میں فن ہیں کمال کے

Rate it: Views: 20 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 08 Oct, 2017
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4072 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.