دل کی دنیا کا جو دستور نہیں ہے کوئی
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

دل کی دنیا کا جو دستور نہیں ہے کوئی
جادہءِ عشق میں مجبور نہیں ہے کوئی

جتنے بھی ظلم کما لیں یہ زمانے والے
روزِ محشر سے تو اب دور نہیں ہے کوئی

کتنا مغرور ہے دیکھو نا زمیں زاد یہاں
جس کے چہرے پہ ابھی نور نہیں ہے کوئی

کب سے ہے شہرِ فسوں کار میں الجھن ہر سو
اپنے حالات سے مسحور نہیں ہے کوئی

کچھ پسِ ذوقِ تمنا بھی ہے چرچا ہر سو
ایسے ہی شہر میں مشہور نہیں ہے کوئی

غم کی کشتی کو کنارے سے لگایا پھر بھی
میری محنت پہ تو مشکور نہیں ہے کوئی

اُس کو بھی حُسنِ محبت کی طلب ہے وشمہ
میرے جیسی بھی یہاں حور نہیں ہے کوئی

Rate it: Views: 25 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 04 Sep, 2017
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4056 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.