کبھی تو یاد آئیں گی
Poet: UA
By: UA, Lahore

کبھی تو یاد آئیں گی
تمہیں بِیتی ہوئی باتیں
جنہیں تم بھول بیٹھے ہو

وہ باتیں جن کو سن کر تم
ہمیشہ مسکراتے تھے
تمہاری مسکراہٹ پر
صدا یہ دِل سے آتی تھی

سدا قائم رہے یہ دلکشی
دلکش تبسم کی
کہ جس کو دیکھ کر
یہ دِل ہمارا مسکراتا تھا

تمہارے مسکرانے پر
زندگی مسکراتی تھی
میری ویران آنکھوں میں
ستارے جگمگاتے تھے

تمہیں بھی یاد ہوں شاید
وہی بِیتی ہوئی باتیں
جنہیں تم بھول بیٹھے ہو

مگر اب تک ہمارا دِل
ہمیں بہلائے جاتا ہے
یہی دہرائے جاتا ہے

کبھی تو یاد آئیں گی
تمہیں بِیتی ہوئی باتیں
جنہیں تم بھول بیٹھے ہو
 

Rate it: Views: 22 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 05 May, 2017
About the Author: uzma ahmad

sb sy pehly insan phr Musalman and then Pakistani
broad minded, friendly, want living just a normal simple happy and calm life.
tmam dunia mein amn
.. View More

Visit 2416 Other Poetries by uzma ahmad »
 Reviews & Comments
khoobsurat simple poetry......
parh kr ye song yaad agya "kabhi to tum ko yaad ayein gi wo baharein wo fiza"
stay blessed!!!
By: Faiza Umair, Lahore on May, 10 2017
Reply Reply to this Comment
behad shukria Dear Faiza Umair ap ny buht khubsurat andaz mein kalam saraha mussarat hue
sha shad o abad rahain
be happy and stay blessed always
By: uzma, Lahore on May, 12 2017
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.