یہ بھی پیار ہے
Poet:
By: Hukhan, karachi

اکثرکہتا ہوں اس سے
نہ یوں لڑا کرو
کمزور ہوں دکھتا مضبوط ہوں
ٹوٹا تو بکھر جاؤں گا خوابوں کی طرح
بکھرا تو بس لوٹ کے نہ آؤں گا
وہ سمجھتا ہے کہ یہ بھی پیار ہے
دلِ نادان پہ اعتبار ہے
سوچتاہوں کیسےسمجھاؤں
میں نہیں دسمبر جو لوٹ آؤں گا
نہ میں ساون جو برس جاؤں گا
میں تو زرد سی ہوا ہوں
خاموشی سے گزرجاؤں گا
جان لو اتنا
زندگی دھوپ اور تم گھنا سایہ

Rate it: Views: 11 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 12 Sep, 2017
About the Author: Hukhan

Visit 247 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
well done great
By: rahi, karachi on Sep, 13 2017
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Sep, 15 2017
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.