میرے جہاں میں تیری کمی ہے!
Poet: سدرہ سبحان
By: Sidra Subhan, Kohat

گئے دنوں کا ملال لے کر
تمھاری چاہت کی سرحدوں سے
بہت ہی آگے نکل چکی ہوں

تمہیں خبر ہے
یہاں کی دنیا بہت حسیں ہے
ہر ایک جانب سے روشنی ہے
ہر اک جاں ہے وفا کا پیکر
ہر اک پہلو میں زندگی ہے
ہر اک منظر میں لاکھوں چہرے
ہر اک چہرے پہ تازگی ہے
ہر اک دل میں چھپے خزینے
وفا ہے، چاہت ہے، چاشنی ہے.
بڑے سلیقے کی زندگی ہے

میں اتنی خوش ہوں
کہ اپنے ہاتھوں کی سب لکیروں کو چومتی ہوں،
حسین رنگوں سے بنتے محلوں کے ہرتصورمیں جھومتی ہوں

مگر یہ کیا کہ
میری روح کے ہر بام و در پر
اداسی بال کھولے سو رہی ہے
عجب سی الجھن ہے، بے کلی ہے
ہر اک ڈھرکن میں خامشی ہے
جو میرے کانوں میں کہہ رہی ہے
جو تو نہیں ہے تو کچھ نہیں ہے
میرے جہاں میں تیری کمی ہے
میرے جہاں میں تیری کمی ہے

Rate it: Views: 1 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 12 Mar, 2018
About the Author: Sidra Subhan

*Hafiz-E-Quraan

*Columnist at Daily Mashriq (نگار زیست)

*PhD scholar in Chemistry
School of Chemistry and Chemical Engineering,
Key Laborator
.. View More

Visit 38 Other Poetries by Sidra Subhan »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.