بن موسم کی بارش
Poet: محمد یوسف راہی
By: Muhammad Yousuf Rahi, Karachi

بن موسم کی بارش بھی یاروں بڑی عجیب ہوتی ہے
مگر یہ بھی کہیں کہیں کسی کسی کو نصیب ہوتی ہے

پہول تو خوشبو دیتا ہے ڈالی پر ہو یا توڑلے کوئی
اس وجہ سے ہی اس کی موت اکثر قریب ہوتی ہے

کیا کریں کہ اتنا آسان نہیں غریب کا مرنا بھی یہاں
دوگز زمیں بھی کہاں غریب کو یہاں نصیب ہوتی ہے

قدرت کی قدرت کو دیکھنا ہو تو دیکھ لو اپنے آپ کو
جسم کے ہر جگہ کی اپنی اپنی ایک ترتیب ہوتی ہے

ہے اس قدر ھجوم پھر بھی کیوں اکیلے ہیں ہم رہی
نہ دل کو سکون ملتا ہےاور نہ راحت نصیب ہوتی ہے

Rate it: Views: 5 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 09 Nov, 2017
About the Author: Muhammad Yousuf Rahi

Visit 4 Other Poetries by Muhammad Yousuf Rahi »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.