خان خود کو بدل لو
Poet:
By: Hukhan, karachi

کئی بار اس سے کہا ہے راہ بدل لو
خود کو بدل لو سوچ کو بدل لو
راہ ہے کٹھن ہماری ،راہ بدل لو
بہت بوجھ ہے جسمِ ناتواں پر کوئی اور ڈھونڈ لو
وہ کہتا ہے تو آؤ ہمارا دل بدل لو
ہماری سوچ کا رخ اس کی منزل بدل لو
ہماری وفا کو بے وفائی میں بدل لو
جو دیکھےتم سنگ سپنے وہ یا چشمِ خواب بدل لو
اتنے دور آکر کہتے ہو ہمسفر بدل لو
چاہا جسے دل نے دن رات،پل میں کیسے بدل لوں
جو کھائی جینے مرنے کی قسمیں کیسے بدل لوں
خان وہ نہیں بدلے گا خود کو بدل لو
تھام لو اس کا ہاتھ اپنی قسمت بدل لو

Rate it: Views: 9 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 17 Sep, 2017
About the Author: Hukhan

Visit 295 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
khan maan ja
By: rahi, karachi on Sep, 18 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.