کیا کریں گے؟
Poet: Kundi Bilal Hussain Bashi
By: Bilal Hussain Kundi, Kundian Mianwali

زرہ زرہ سی ان الجھنوں میں پڑے رہیں گے تو کیا کریں گے؟
ھم اپنی اپنی انا کی ضد پہ اڑے رہیں گے تو کیا کریں گے؟

ابھی تو بدلیں گے کئ موسم، دکھوں کے آنے طوفان ہونگے
ہمارے سرپہ غموں کے بادل کھڑے رہیں گے تو کیا کریں گے؟

ابھی سے میلے جو دل ہوے تو کٹے گی کیسے یہ زندگانی۔۔؟
ہمارے آپس میں اختلاف بڑھے رہیں گے تو کیا کریں گے؟

لوگوں نے کرنی ہے سر کشی بھی ، چھین لینی ہے سب خوشی بھی
باشی دل میں غبار رکھ کر لڑے رہیں گے تو کیا کریں گے؟

Rate it: Views: 10 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 02 May, 2017
About the Author: Bilal Hussain Kundi

Visit Other Poetries by Bilal Hussain Kundi »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
wah..............
By: Bilal Hussain Kundi, Kundian Mianwali on May, 11 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.