میں ملالہ ہوں
Poet: Anwar Kazimi
By: Anwar Kazimi, mississauga, Canada

میں ملالہ ہوں ، مجھے تم غور سے پہچان لو
گولیوں سے مرَ نہیں سکتی کبھی ، یہ جان لو

کر رہی ساری دنیا بات میرے شان کی
مجھکو ہے یہ فخر کہ بیٹی ہوں پاکستان کی

تحفہء حبِ نبی ہوں ، عطیہء ذکرِ بتول
کیوں نہ میری ہر دعا بارِ الہی ہو قبول

علم کی شمع سے ہے مجھکو محبت دو ستو
شاعرِ مشرق سے ہے مجھکو عقیدت دوستو

راحتِ قلب و نظر ہوتی ہیں ساری بیٹیاں
قوم کا منہ تکَ رہی ہیں آج پیاری بیٹیاں

ناز سے پالو اِنہیں ، رکھو رواَ اچھا سلوک
باپ بنَ کر بیٹیوں کو دو برابر کے حقوق

لفظ اَقراء ہو زباں پر ، ہاتھ میں گر ہو کتاب
خود تمہیں مل جائے گا سارے سوالوں کا جواب

فاتحِ عالم بنو تمُ علم کی تلوار سے
اپنے سینے سے لگا لو بیٹیوں کو پیار سے

Rate it: Views: 90 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 13 Oct, 2013
About the Author: Anwar Kazimi

I am a pharmacist by profession, living in Canada .. View More

Visit 85 Other Poetries by Anwar Kazimi »
 Reviews & Comments
Bohat umda klam takhleeq kia hai Anwar bhaee
der baad aey magar bohatv ala takhleeq parney
ko di
meri taraf sey is khoobsurat ghazal k likhney par
bohat mubarak baad qbool farmaen
aap ko meri taraf sey bohat EID MUBARAK HO
BE HAPPY WITH ALL THE BEAUTIES OF LIFE
By: Dr.Zahid Sheikh, Lahore Pakistan on Oct, 15 2013
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.