میرے خابوں کی جو کہانی ہے
Poet: ارشد ارشی
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

میرے خابوں کی جو کہانی ہے
میری وہ آخری نشانی ہے

ان کی خاموشی کے کیا کہنے
اس کے پیچھے بھی اک کہانی ہے

کیوں خوں بہنے لگا ہے لوگوں کا
کیا یہ ہی تیری حکمرانی ہے

چھوڑ دو دشمنوں وطن کو مر ے
میرے اجداد کی یہ نشانی ہے

مفلسی کیا ہے وہ کیا جانیں
دولت کی جہاں فراوانی ہے

زندگی خاتمے کی جانب ہے
موت برحق سب کو آنی ہے

ٹوٹ جائے گا روح سے رشتہ
جسم سے جان نکل جانی ہے

Rate it: Views: 16 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 05 Dec, 2017
About the Author: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi)

My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More

Visit 37 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) »
 Reviews & Comments
Masha Allah bohoth umda ..... Jazak Allah Hu Khairan Kaseera
By: farah ejaz, Karachi on Dec, 08 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.