خواہش
Poet: Zoofashan Waheed
By: Zoofashan Waheed, Lahore

اکثر میں جو چاہتی ہوں
وہ پوراہو نہ پاتا ہے
جو پورا نہ ہو پاتا ہے
وہ خواہشیں میری ہوتی ہیں
خواہشیں پوری نہ ہو کر میری
آخر حسرتیں بن جاتی ہیں
جب حسرت ہی رہ جائے تو
پھر مرنے کو جی چاہتا ہے
پر یہ بھی تو اک خواہش ہے
جو پھر ناکام لوٹاتی ہے
ضوفی~ یہ بھی کیا زندگی ہے جو
خواہشوں کے پیچھے بیت جاتی ہے

Rate it: Views: 16 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 28 Sep, 2017
About the Author: Zoofashan Waheed

Visit Other Poetries by Zoofashan Waheed »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.