چل کہ تجھے اب چلنا ہے
Poet: Irfan Ali
By: Irfan Ali, Rawalpindi

کس کی تعریف ہو
کس کی حمد ہو
جو اتنا حسین ہو
جو اتنا جمیل ہو
ذرہ ذرہ ثنا کرے
پتا پتا پڑھا کرے
قطرہ قطرہ کہا کرے
ربنا لک الحمد
ربنا لک الحمد
جن و انس
چرند وپرند
شجر و ہجر
بحر و بر
چوری چوری
چپکے چپکے
گیت گارہے ہیں
اے اللہ اللہ
اے اللہ اللہ
یہ نغمہ گنگنا رہے ہیں
اسی کے ازن سے
سانسیں چلتی ہے
باتیں چلتی ہیں
خوشیاں پلتی ہیں
پھول مہکتے ہیں
کلیاںکھلتی ہیں
پھر اگر حکم الہی ہو
چاہے آہنی دیوار بنائی ہو
اجل آجاتی
پھر نہیں چلتی سفارش کسی کی
پھر نہیں مانی جاتی گزارش کسی کی
اے نفس چل اب تجھے چلنا ہے
چل چل کہ تجھے اب ملنا ہے
اپنے پروردگار سے
چل چل کہ تجھے اب چلنا ہے

Rate it: Views: 33 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 01 Nov, 2011
About the Author: Irfan Ali

Visit 198 Other Poetries by Irfan Ali »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.