ڈوبتی کشتی کو کنارہ نہ ملا
Poet: Syed Saqlain Gillani
By: Syed Saqlain Gillani, Attock

 ڈوبتی کشتی کو کنارہ نہ ملا
چاہنے والوں کو سہارا نہ ملا

جس سے ملنے کی تھی خواہش
وہ شخص مجھے دوبارہ نہ ملا

محبت میں ملتے ہیں اکثر غم
رونے کے لیے کندھا تو تمہار ا نہ ملا

اے دل کس قدر ہے چاہت تیری
پیار اس کا تمھیں سارا نہ ملا

ثقلین کہاں کھو گیا ہے ہمسفر تیرا
دل سکوں پائے جس سے ہو نظارا نہ ملا

Rate it: Views: 15 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 02 Apr, 2018
About the Author: Saqlain

I am Saqlain Shah from Lawrencepur Attock, .. View More

Visit 13 Other Poetries by Saqlain »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.