گر میں نہ ہوا
Poet:
By: Hukhan, karachi

دیکھنا زندگی تجھے چھو کے گزر جائے گی
گر میں نہ ہوا
سوچ لو تیری آنکھ بھر آئے گی
گر میں نہ ہوا
سچ ہے اک پل بھی نہ جی پاؤ گی
گر میں نہ ہوا
پگلی کیسے مسکرا پاؤ گی
گر میں نہ ہوا
ہاں سوچو کس سے لڑ پاؤ گی
گر میں نہ ہوا
ہاں سوچو ذرا کس کو پیار سے بلاؤ گی
گر میں نہ ہوا
کیسے کسی سے کہو گی ادھر آؤ ذرا
گر میں نہ ہوا
نہ کوئی شک کیسے لمحے گزار پاؤ گی
گر میں نہ ہوا
کسے اپنے قصے سناؤ گی
گر میں نہ ہوا
ہو سکتا ہے لقمہِ اجل بن جاؤں
پھر کس کو ستاؤ گی
گر میں نہ ہوا

Rate it: Views: 13 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 27 Jan, 2018
About the Author: Hukhan

Visit 349 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
so romantic
By: aslam memon, karachi on Jan, 28 2018
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Jan, 30 2018
wah wah amazing
By: rahi, karachi on Jan, 28 2018
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Jan, 30 2018
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.