یہ ضروری تو نہیں
Poet: Shakira Nandini
By: Shakira Nandini, Oporto

ہم جسے چاہیں، وہ بھی ہمیں چاہے
یہ ضروری تو نہیں
ملے پیار کے بدلے پیار
یہ ضروری تو نہیں

ملاکر نظریں کُچھ لوگ
مل جاتے ہیں دل میں
ہو ملن تن کا تن سے
یہ ضروری تو نہیں

ہوتے ہیں کُچھ لوگ
جو پا لیتے ہیں چاہ کر کُچھ بھی
ہو سب کا نصیب اِک جیسا
یہ ضروری تو نہیں

صورت مل جاتی ہے اکثر
دوسروں سے تیری
سیرت بھی ہو تُجھ جیسی
یہ ضروری تو نہیں

شاکرہ مت رکھ حسرت
کسی پر مر کر جینے کی
سب کا نصیب ہو آسان موت
یہ ضروری تو نہیں

Rate it: Views: 26 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 23 Nov, 2017
About the Author: Shakira Nandini

I am settled in Portugal. My father was belong to Lahore, He was Migrated Muslim, formerly from Bangalore, India and my beloved (late) mother was con.. View More

Visit 184 Other Poetries by Shakira Nandini »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.