بلا کا حسن اس پر بھرم
Poet:
By: Hukhan, karachi

ہائے یہ برسات اور یہ رِم جھم
سوندھی سی مٹی کی خوشبو اور ہم
بھول گئے سارے غم
میرے وطن کی مٹی اور ہم
اس مٹی میں بسی اس کی خوشبو اور ہم
آنکھیں ہیں غضب مسکان میں ہے دم
مجال کہ ہو جائیں اداس ذرا بھی ہم
وہ ساتھ ہو تو پھر پاس کہاں آتے ہیں فکر و غم
اب تو کر ہی لیں بغاوت ذرا ہم
کوئی مانے نہ مانے مان گئے ہم
لاکھوں میں اک ہمارا صنم
کم سن سی عمر اور اس پر بلا کا بھرم
وقت کرلے جتنے بھی ستم
کہتا ہے نہ ہوں گے اب جدا ہم
کر لیا فیصلہ اک قدم بھی پیچھے نہ ہٹیں گے ہم

Rate it: Views: 9 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 21 Nov, 2017
About the Author: Hukhan

Visit 319 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
so positive so romantic
By: khalid, karachi on Nov, 22 2017
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Nov, 24 2017
v nice
By: rahi, karachi on Nov, 22 2017
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Nov, 24 2017
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.