دل کو سمجھاتا ہوں
Poet:
By: Hukhan, karachi

روز خود کو سمجھاتا ہوں
دل کو بھی بہلاتا ہوں
کیا میں بھی محبت کو جانتا ہوں
یا خود کو بس آزماتا ہوں
قابل نہیں میں اس کے جانتا ہوں
دور ہو کے بھی پاس ہو جاتا ہوں
دل وہیں اس کی چوکھٹ پہ چھوڑ آتا ہوں
آنکھوں کو بھی ہر پل سمجھاتا ہوں
جانے کیوں نئے خواب بے وجہ سجاتا ہوں
ہے وہ ہمسفر پھربھی تنہا رہ جاتا ہوں
کارواں آگے میں پیچھے رہ جاتا ہوں
دوست بن گئے دکھ بس اب ہر پل مسکراتا ہوں
یہ دکھ اب روز ہی کھاتا ہوں
خار ہیں ہر سو میرے لیے جانتا ہوں
ہو جائے اب وہ کسی اور کا یہ چاہتا ہوں
خان چھوڑو محبت کرنا میں دل کو روز سمجھاتا ہوں

Rate it: Views: 20 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 13 Nov, 2017
About the Author: Hukhan

Visit 319 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
sad hay
By: rahi, karachi on Nov, 15 2017
Reply Reply to this Comment
ys
By: hukhan, karachi on Nov, 17 2017
so romantic than its been sad tale
By: khalid, karachi on Nov, 15 2017
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Nov, 17 2017
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.