کُچھ خواب
Poet: Shakira Nandini
By: Shakira Nandini, Oporto

ہم نے کُچھ خواب دیکھے تھے
انجانے میں کسی کو اپنا بنایا تھا
وہ ملے اس طرح کہ ہم خود کو بھول گئے
اُن کے سپنوں کی دنیا میں کھو گئے
ہم بھی سپنوں کی دنیا میں جینے لگے
اُن کو دل ہی دل میں اپنا بنانے لگے
کُھلی جب آنکھیں تو سپنے ٹوٹنے لگے
جینا ہم چاہتے تھے وہ دُور ہونے لگے
انجانے میں جنہیں ہم چاہا کرتے تھے
پتا نہ چلا کب کسی اور کا نصیب ہونے لگے
اِک پل میں اُنہوں نے ہمیں بُھلا دیا
کسی اور کو اپنا بنا لیا
ہمیں اس قدر رُلا دیا
چاہ کر بھی ہم اُسے بُھلا نہ سکے
اپنا کسی اور کو بنا نہ سکے

Rate it: Views: 7 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 10 Nov, 2017
About the Author: Shakira Nandini

I am settled in Portugal. My father was belong to Lahore, He was Migrated Muslim, formerly from Bangalore, India and my beloved (late) mother was con.. View More

Visit 172 Other Poetries by Shakira Nandini »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.