قتل
Poet:
By: Hukhan, karachi

وہ جب بھی آنکھیں اٹھاتا ہے
ہم قتل ہو جاتے ہیں
وہ جب بھی پلکیں جھکاتا ہے
ہم قتل ہو جاتے ہیں
وہ جب بھی مسکراتا ہے
ہم قتل ہو جاتے ہیں
وہ جب بھی شرماتا ہے
ہم قتل ہو جاتے ہیں
وہ جب بھی چلمن میں آتا ہے
ہم قتل ہو جاتے ہیں
وہ جب بھی خواب میں آتا ہے
ہم قتل ہو جاتے ہیں
خان اس سے کہنا کچھ ادائیں ہی کم کر لے
کچھ دن ہمیں بھی وہ جی لینے دے

Rate it: Views: 11 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 27 Sep, 2017
About the Author: Hukhan

Visit 267 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
bht khubh
By: rahi, karachi on Sep, 28 2017
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Oct, 08 2017
yes some times we face such situation in life but just once
By: khalid, karachi on Sep, 28 2017
Reply Reply to this Comment
yes ,,thx
By: hukhan, karachi on Oct, 16 2017
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.