"سراب"
Poet: ام بلال ریاض
By: ام بلال, ریاض

پانی سمجھ کر جسکے پیچھے بھاگتا رھا وہ دور تک
تھک کر پھر گر گیا ھاتھ نہ آیا وہ سراب
اپنے مقدر کو بدلنے کی کوشش کرتے کرتے
قبر کے اندھیروں میں اتر گئے کئی گلاب
بڑھاپا والدین کا اگرچہ گزرا اولڈ ھاوس میں
مرنے کے بعد اس نے انکے مقبرے پر بنایا محراب
قاتل وہ اجرتی تھا لوگوں کو مار مار کر
ھسپتال بنا کر مگر کمایا اس نے بہت ثواب
پوچھا میں نے کسی سے منزل کی تیری حد کہاں
نہیں تھا میرے سوال کا اسکے پاس کوئ جواب
نیند کی کمی کا اسکو شکوہ تو ضرور تھا
جاگتے میں ھی دیکھا مگر اسنے ھمیشہ خواب
جی بھر کے گناہ کر کے خود کو دیتے ھیں تسلیاں
اللہ غفور الرحیم ھے وہ کر دیگا ھم کو معاف

Rate it: Views: 6 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 22 Sep, 2017
About the Author: ام بلال

Visit 6 Other Poetries by ام بلال »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
ااسلام و علیکم۔ بہت خوب ۔ بہت زبردست۔ بہت اچھی نظم لکھی ہے۔ ماشاءالله۔
By: sister Abdullah , Riyad on Oct, 16 2017
Reply Reply to this Comment
زبردست
By: sabahat sami, turkey on Oct, 13 2017
Reply Reply to this Comment
اسلام و علیکم بہت بہت بہت خوب۔ماشاءالله
By: Palvisha Neelam, karachi on Oct, 13 2017
Reply Reply to this Comment
best poem ever I read.
By: sabahat sami, karachi on Oct, 13 2017
Reply Reply to this Comment
Very nice
By: Azahar, ریاض on Sep, 25 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.