ایسا ہی ہوں میں
Poet:
By: Hukhan, karachi

ہاں سچ ہے
تھوڑا سا اڑیل ہوں۔۔تھوڑا سا سڑیل ہوں
ہر اک کے آگے بچھ جائے جو
نہیں ایسا نہیں میں
کہہ دوں مغرور ہوں میں
ہر کسی کے سامنے
ہتھیلی پر دل نہ رکھ پاؤں میں
ہاں غرور ہے مرد ہوں میں
کیسے یہ بھول جاؤں میں
بلا وجہ کسی کو منا ہی نہ پاؤں میں
چل سکو تو ضرور چلو
سہارا تو سہی
مگر بیساکھی کسی کی
نہ بن پاؤں میں
وفا کی تو کبھی کمی نہ ہوئی
مگر خود کو خود کی
نظر میں نہ گرا پاؤں میں
چل سکو تو ساتھ چلو
گزارشیں دل کی نہ بتا پاؤں میں
جان سکو تو جان لو
مردانگی کا اپنی سودا نہ کرپاؤں میں
نظر میری آسمان پرمگر
پاؤں کبھی زمین سے نہ اٹھا پاؤں میں
ایسا ہی ہوں میں

Rate it: Views: 9 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 10 Sep, 2017
About the Author: Hukhan

Visit 247 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
GR8 G TUSI CHA GE HO
By: Tanveer ahmad tanha, Lilla on Sep, 18 2017
Reply Reply to this Comment
thx bro
By: hukhan, karachi on Sep, 19 2017
Really nice...
By: Ali, Melbourne on Sep, 12 2017
Reply Reply to this Comment
thx bro
By: hukhan, karachi on Sep, 13 2017
correct bilkl
By: rahi, karachi on Sep, 11 2017
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Sep, 13 2017
thx
By: hukhan, karachi on Sep, 13 2017
thx
By: hukhan, karachi on Sep, 13 2017
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.