وہ تو تاجر تھا
Poet: SAGAR HAIDER ABBASI
By: sagar haider abbasi, Karachi

وہ تو تاجر تھا محبت کی تجارت کرتا تھا
دل مگر پھر بھی یہ اس سے ہی محبت کرتا تھا

وہ تو رہتا تھا تجارت کی نئی کاوش میں پر
میں خدا دل کا سمجھ اس کی عبادت کرتا تھا

جان کر بھی کتنا انجانا سا رہتا تھا یہ دل
اپنی سازش کی یوں سچ سےوہ وضاحت کرتا تھا

میرے دل میں بھی رہا وہ تو کئی دن تک مگر
لب سے اقرارِ وفا دل سے بغاوت کرتا تھا

وہ تو تاجر تھا محبت کی تجارت کرتا تھا
دل مگر پھر بھی یہ اس سے ہی محبت کرتا تھا

Rate it: Views: 54 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 09 Jul, 2017
About the Author: sagar haider abbasi

Sagar haider Abbasi
.. View More

Visit 210 Other Poetries by sagar haider abbasi »
 Reviews & Comments
wa wa wa sagar vo to tajar tha kia baat wa
By: saima naz, karachi on Jul, 16 2017
Reply Reply to this Comment
vo to tajar tha wa sir
By: saima naz, karachi on Jul, 12 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.