اپنے ہی نام پہ اب خود سے بغاوت کرنا
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

اپنے ہی نام پہ اب خود سے بغاوت کرنا
زندگی ! مجھ سے تو جینے کی تجارت کرنا

آئینہ ٹوٹ بھی سکتا ہے مرے ہاتھ میں بھی
میری سانسوں سے خدارا تو شرارت کرنا

اٹھ نہ جائے یہ کہیں سوئی ہوئی وصل کی رات
اونچی آواز میں ہجرت کی تلاوت کرنا

بات ہی بات میں مٹ جائے نہ نقشہ دل کا
شہر زندان کی تو ایسی بھی حالت کرنا

ہم ترے شہر کے باسی ہیں ترے جانثار
ہم وفادار ہیں ہم سے تو عداوت کرنا

جن کے ہوتے ہوئے لٹ جائے حسن کی دولت
ایسے رشتوں کی اے وشمہ تو وکالت کرنا

Rate it: Views: 18 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 20 Apr, 2017
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 3924 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.