ہواؤں سے ہر دم شرارت کروں میں
Poet: وشمہ خان وشمہ
By: وشمہ خان وشمہ, ملایشیا

فضاؤں کی ایسی کفالت کروں میں
ہواؤں سے ہر دم شرارت کروں میں

ملی پر، بہت مشکلوں سے ملی ہے
محبت سے کیا اب شکایت کروں میں

جو رہتا ہے دل میں ، اسے مجھ کو دے دے
خدا ! تیری ہر دم عبادت کروں میں

اندھیروں نے ہر سو بھرے ہیں اندھیرے
ستاروں سے کیسے تجارت کروں میں

وہ بیٹھا ہے راہوں میں سولی سجائے
تو رسموں سے کیسے بغاوت کروں میں

مجھے چاہنے والے دل میں مکیں ہیں
یہاں سب سے اک سی محبت کروں میں

یہ دل تیرے قدموں میں رکھ بیٹھی وشمہ
بتا اور کیسی عنایت کروں میں

Rate it: Views: 14 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 15 Feb, 2017
About the Author: washma khan washma

I am honest loyal.. View More

Visit 4101 Other Poetries by washma khan washma »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.