جو درد دیتا ہے وہی دوا بھی کرتا ہے
Poet: Muhammad Tanveer Baig
By: Muhammad Tanveer Baig, Islamabad

جو درد دیتا ہے وہی دوا بھی کرتا ہے
جو پتھر دل ہو کبھی پگھلا بھی کرتا ہے

نا کر غرور اتنا کہ خود ہی ٹوٹ جایے تو
کہ چاند کو گرہن کبھی لگابھی کرتا ہے

نظر چراتا ہے کوئی رسوائی کے ڈر سے یونہی
الزام یوں کہ بندہ، بے وفا ہوا بھی کرتا ہے

بے وفا کیا سمجھے گا تو عشق زلیخہ کو
سچا عشق ہو گر تو یوسف ملا بھی کرتا ہے

تو اس امید پے گم سم کچھ اس طرح تنویر
کہ بن مانگے خدا سب کچھ دیا بھی کرتا ہے

Rate it: Views: 100 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 16 Apr, 2015
About the Author: Muhammad Tanveer Baig

Visit 49 Other Poetries by Muhammad Tanveer Baig »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Very nice and Amazing words.
By: Waqas Tareen, Karachi on May, 09 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.