عقل میری متفکر ھے
Poet: Mohammad shaukat mehmood
By: Mohammad shaukat mehmood, Jhelum

گناہ ---گار ----ھوں ، نہیں معلوم
آگے مجھ سے
ھو گا کیا ؟ شکر ھے اس کا
جس نے جاننے کا ، مجھے شوق دیا
کسے معلوم ، جستجومیں اس کی
ملتی ھے مجھے لذت کتنی
جان گر لیا ، اس کو تو
ملے گی انتہاء لذت کیا
شوق میرا ----یہ کہتاھے کہ
لمحہ میں
ایک بھی نہ ضائع کروں
مگر
کر نہیں سکتا ایسے
معلوم نہیں
مجھ میں کمی ھے کیا
دل میرا چاھتا ھے کہ
ھر وقت وہ تصور میں رھے
مگر ، عقل میری متفکر ھے
اس کا تصور ھو گا کیا ؟

 Famous in Poetry

View More Poets
Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
20 Apr, 2012 Total Views: 58 Print Article Print
About the Author: Mohammad shaukat mehmood

Visit 25 Other Poetries by Mohammad shaukat mehmood »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>

Reviews & Comments

Khubsurat Khayaal. Us Ka Tassawur Hoga Kya? Hmmmm. Khoob Janab.
By: Ahsan Mirza, Karachi on May, 12 2012
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.