انجان
Poet: Hukhan
By: Hukhan, karachi

سچ ہے اپنا درد خود ہی سہتے ہیں
سکون کے پل میں بھی بے قرار رہتے ہیں
زندگی کی بے رحمی پر بھی مسکراتے ہیں
عجب ہے اندر شور اسے چھپاتے ہیں
جان کے بھی انجان بنے رہتے ہیں
بے قراری بھی ہے قرار سی مانتے ہیں
پیوند سے بھری ہے پوشاک سب کہتے ہیں
کردار میں نہیں کوئی سوراخ یہ جانتے ہیں

Rate it: Views: 4 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 01 Jun, 2018
About the Author: Hukhan

Visit 402 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
wah bhai
By: rahi, karachi on Jun, 06 2018
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.