اکثر بھول جاتا ہوں
Poet: Hukhan
By: Hukhan, karachi

تیری یادوں میں اکثر
یہ بھول جاتا ہوں
کہ تجھے تو بھول جانا ہے
تیری باتوں میں اکثر یہ بھول جاتا ہوں
کہ توحقیقت نہیں بس اک فسانہ ہے
تیری محفل میں اکثر یہ بھول جاتا ہوں
کہ تو دعا نہیں کسی کا نذرانہ ہے
گھر میں تجھے دیکھ کر اکثر
یہ بھول جاتا ہوں
کہ اک دن تجھے اپنے گھر جانا ہے
تیرا روپ دیکھ کے اکثر
یہ بھول جاتا ہوں
یہ سب پرایہ ہو جانا ہے
خان کرتے تھےجو جادوگری
کہ اکثر یہ بھول جاتا ہوں
تیرا کہاں کوئی ٹھکانہ ہے

Rate it: Views: 23 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 05 Mar, 2018
About the Author: Hukhan

Visit 405 Other Poetries by Hukhan »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
very nice and thoughtfull
By: khalid, karachi on Mar, 05 2018
Reply Reply to this Comment
thx
By: hukhan, karachi on Mar, 09 2018
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.