گھنیر ی شا م کا ڈ ھلتا سو ر ج
Poet: Kiran Shahzadi
By: Kiran Shahzadi, Rawalpindi

کبھی تم نے سو چا ھے کہ
گھنیر ی شا م کا ڈھلتا سو ر ج
ر ا ز فا ش کیو ں نہیں کر تا
کیو ں و ہ اپنے ا ند ر
سمو لیتا ھے و ہ سا ر ی با تیں
جو ا س کو اچھی نہیں لگتیں
و ہ گو ا ہ ھے
ھا ں! مگر ا کیلا ھے
ا سے ا کیلے ھو نے کی فکر نہیں
و ہ ضبط کی حد کو
عبو ر کر چکا ھے
و ہ اپنے ا ند ر کی بات
کسی پہ عیا ں نہیں کر تا
و ہ آ ج بھی شا ید
میر ی طر ح سو چو ں کی
دلدل میں پھنسا ھو ا ھے
و ہ سیا ہ ر ا ت کے آ نچل تلے
خو د کو محفو ظ سمجھتا ھے
و ہ آ س کی چا د ر تا نے
خا مو ش رھتا ھے
و ہ د لیلو ں میں نہیں پھنستا
و ہ ا پنے ا ند ر چھپے غبا ر کو
ا ک چھو ٹی سی ر ا ہ د ا ر ی سے
نکل جا نے کو کہتا ھے
و ہ مہما ں نہیں بنتا
و ہ خو ا ب نہیں د یکھتا
و ہ تصو ر ا ت کے تا نے با نے نہیں بنتا
و ہ سمند ر کے پا نیو ں میں ا کثر
ا پنا عکس چھو ڑ جا تا ھے

Rate it: Views: 6 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 09 Jan, 2018
About the Author: Kiran Shahzadi

Visit 112 Other Poetries by Kiran Shahzadi »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.