الزام تم پر ایک بھی آنے نہیں دیا
Poet: ارشد ارشیؔ
By: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi), Karachi

اس کی انا نے اسےکبھی آنے نہیں دیا
میری انا نے بھی اسے بلانے نہیں دیا

ہم نے بھی سر جھکا دیا خاموش ہوگئے
اس طرح اسےہاتھ چھڑانے نہیں دیا

جن سے رہی عمر بھرہاتھ ملانے کی آرزو
اس نے کبھی ہاتھ بڑھانے نہیں دیا

اب اس قدر بھی دور نہ تھا اس کا گھر مگر
جانے کس بات نے اسے آنے نہیں دیا

ترکِ تعلقات میں ممکن تھا سب مگر
ہم نےتیرے نشاں کو مٹانے نہیں دیا

طوفان سے الجھتے رہے ہم جس کے واسطے
خود اس نے ایک چراغ جلانے نہیں دیا

میں چپ رہا روتا رہا پتھر بنا رہا
الزام تم پر ایک بھی آنے نہیں دیا

Rate it: Views: 12 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 06 Dec, 2017
About the Author: Muhammad Arshad Qureshi (Arshi)

My name is Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) belong to Karachi Pakistan I am
Freelance Journalist, Columnist, Blogger and Poet.​President of Internati
.. View More

Visit 37 Other Poetries by Muhammad Arshad Qureshi (Arshi) »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.