کہاں تھے تم چلے آتے محبت نے پکارا تھا
Poet: Muhammad Tanveer Baig
By: Muhammad Tanveer Baig, Islamabad

کہاں تھے تم چلے آتے محبت نے پکارا تھا
زمانے کو دکھا جاتے برہم رکھنا ہمارا تھا

تیری یہ دوریاں ہم کو کبھی برباد نہ کرتی
تمیہں ہم سے محبت تھی یہ کہنا تو گوارہ تھا

کیوں تم نے چھوڑ دیں راہٰیں کہ جن پر ساتھ تھے چلتے
یہ سوچوں گر جو تم کہتے محبت تو دکھاوا تھا

چلے تھے شمع پر مٹنے نا جانے کیوں یہ پروانے
انھٰٰیں جلنے کی حسرت تھی ہمیں جلنا ہی پیارا تھا

تم نے دے دیئے جو غم وہ ہنس کر لے لیئے ہم نے
تم تب تب یاد آتے تھے کہ جب جب غم بھلایا تھا

Rate it: Views: 34 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 05 Oct, 2017
About the Author: Muhammad Tanveer Baig

Visit 49 Other Poetries by Muhammad Tanveer Baig »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
"برہم" نہیں "بھرم"
anyways nice verse
good luck and stay blessed
By: uzma, Lahore on Oct, 13 2017
Reply Reply to this Comment
Thank you Miss Uzma for corrections.
By: Muhammad Tanveer Baig, Islamabad on Oct, 15 2017
very heart touching lines.
By: Sania Saeed, Karachi on Oct, 10 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.