ڈر لگتا ہے
Poet: نعیمہ نصرت بھٹی
By: Bakhtiar Nasir, Lahore

پارک ‘ سینما ‘ بازار کہیں بھی جانے سے ڈر لگتا ہے
گھر میں ہی پڑھوں خبریں ‘ باہر جانے سے ڈر لگتا ہے
نہ جانے کیا اور اور کس طرح ملایا ہوگا قصائ نے
اب تو گھر ہو یا ہوٹل ‘ گوشت کھانے سے ڈر لگتا ہے
اک بار جو روٹھ گئ بیگم شاپنگ پر نہ جانے سے
دوبارہ اب اس کو منانے سے ڈر لگتا ہے
ہر بات پہ ٹہرائے گا وہ مجھے ہی قصور وار
باس کوکوئ بھی مسلہ بتانے سے ڈر لگتا ہے

Rate it: Views: 9 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 17 Jun, 2017
About the Author: Bakhtiar Nasir

A man likes for what he thinks you are; a woman for what you think she is. { Ivan Panin }.. View More

Visit 299 Other Poetries by Bakhtiar Nasir »
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.