خوابوں کو تعبیر ملے
Poet: Rana Tabassum Pasha(Daur)
By: Rana Tabassum Pasha(Daur), Dallas, USA

‎خوابوں کو تعبیر ملے
‎بس جذبہء تعمیر ملے
‎دوائے دل اکسیر ملے
‎دعاؤں کو تاثیر ملے
‎تیرے نام کی لکیر ملے
‎میرےہاتھوں پہ تحریر ملے
‎کیسے کوئی بچ پائے گا
‎جب زلف گرہ گیر ملے
‎میرے حسن کا قیدی
‎عشق کا اسیر ملے
‎تجدید الفت کر ڈالی
‎کوئی نئی تعزیر ملے
‎تنکے ڈھونڈنے والوں کو
‎آنکھوں میں شہتیر ملے
‎کاغذ کے پھولوں سے
‎عنبر ملے یا عبیر ملے؟
‎یاد گلے کا ہار بنے
‎جب درد کی زنجیر ملے
‎رعنا نے دل تھام لیا
‎جگر میں اتنے تیر ملے

Rate it: Views: 11 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 20 Apr, 2017
About the Author: Rana Tabassum Pasha(Daur)

Visit 25 Other Poetries by Rana Tabassum Pasha(Daur) »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.