میں اُسے ڈھونڈنے نکلا۔۔۔ تو خُود کو کھو بیٹھا
Poet: Muhammad Imran Khan - emron mano
By: Muhammad Imran Khan, Peshawar

میں اُسے ڈھونڈنے نکلا۔۔۔ خُود کو کھو بیٹھا
زخم جتنے بھی پُرانے تھے۔۔۔۔ سب کو دھو بیٹھا

یہ اُس کا کرم، عطا ہے ۔۔۔۔۔ابھی بھی، آج تلک
گنہگار ہوں پھر بھی ۔۔۔۔۔۔۔ حرم کو ہو بیٹھا

وہ مُجھ کو دیتا ہے۔۔۔۔ میری اوقات سے بڑھ کر
میں ناسمجھ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اوقات ہی کو کھو بیٹھا

نئے ہیں رات دن۔۔۔۔۔۔۔ نت نئی آزمائیشیں ہیں
نہ ہوتا فضل جو اُس کا ۔۔۔۔ خُود کو ڈبو بیٹھا

ہر دانا آتا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اُسکی عنایت سے
ہر دانا میں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ تسبیح کو پرو بیٹھا

Rate it: Views: 32 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 20 Mar, 2017
About the Author: Muhammad Imran Khan

I am Muhammad Imran Khan, from Peshawar.

I am a very simple, God fearing, caring, talented, understanding, trustworthy and kind hearted human bein
.. View More

Visit 112 Other Poetries by Muhammad Imran Khan »
 Reviews & Comments
MashaAllah very nice.
By: Muhammad Tanveer Baig, Islamabad on Mar, 30 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.