جو تمہارے لب جاں بخش کا شیدا ہوگا
Poet: Akbar Allahabadi
By: sharjeel, khi

جو تمہارے لب جاں بخش کا شیدا ہوگا
اٹھ بھی جائے گا جہاں سے تو مسیحا ہوگا

وہ تو موسیٰ ہوا جو طالب دیدار ہوا
پھر وہ کیا ہوگا کہ جس نے تمہیں دیکھا ہوگا

قیس کا ذکر مرے شان جنوں کے آگے
اگلے وقتوں کا کوئی بادیہ پیما ہوگا

آرزو ہے مجھے اک شخص سے ملنے کی بہت
نام کیا لوں کوئی اللہ کا بندا ہوگا

لعل لب کا ترے بوسہ تو میں لیتا ہوں مگر
ڈر یہ ہے خون جگر بعد میں پینا ہوگا

Rate it: Views: 51 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 06 Jan, 2017
About the Author: owais mirza

Visit Other Poetries by owais mirza »

Currently, no details found about the poet. If you are the poet, Please update or create your Profile here >>
 Reviews & Comments
Many of the Ghazal singers sing the Ghazalz of Akbar Allahabadi because he has an ability to write Ghazal in a lovely singing mood like few other Ghazal poets in which Deewan e Ghalib is famous.
By: Yaqoob, khi on Jan, 19 2017
Reply Reply to this Comment
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.