ایک سوال
Poet: نوید رزاق بٹ
By: نوید رزاق بٹ, سویڈن

کِیا ہے کس نے خراب لوگو
بتاؤ کر کے حساب لوگو
ہمی تو ہیں اِس چمن کے باسی
ہمی نے روندے گلاب لوگو

ترستے پنچھی نے جان دے دی
!ملی نہ پانی کی بوند اُس کو
چُرائے کس نے چمن کے چشمے؟
سجائے کس نے سراب لوگو؟

کِیا ہے کس نے خراب لوگو
بتاؤ کر کے حساب لوگو
ہمی تو ہیں اِس چمن کے باسی
ہمی نے روندے گلاب لوگو

یہ رشوتوں کا نظام، ہائے
یہ جھُوٹا سچا کلام، ہائے
یہ منصبوں کو سلام، ہائے
یہ 'تیز دولت' کے خواب لوگو

کِیا ہے کس نے خراب لوگو
بتاؤ کر کے حساب لوگو
ہمی تو ہیں اِس چمن کے باسی
ہمی نے روندے گلاب لوگو

ہمی نے نفرت کے بیج بوئے
ہمی نے پالا ہے ظلمتوں کو
ہمی نے لُوٹا ہے اپنے گھر کو
ہمی ہیں اپنا عذاب لوگو

کِیا ہے کس نے خراب لوگو
بتاؤ کر کے حساب لوگو
ہمی تو ہیں اِس چمن کے باسی
ہمی نے روندے گلاب لوگو

Rate it: Views: 72 Post Comments
 PREV All Poetry NEXT 
 Famous Poets View more
Email
Print Article Print 29 May, 2014
About the Author: Ibnay Muneeb

https://www.facebook.com/Ibnay.Muneeb.. View More

Visit 121 Other Poetries by Ibnay Muneeb »
 Reviews & Comments
jitni achi aap ki nasri tehreerain hain utna hi umda shairana zoq bhi rakhtay hain aap brother.........i'm impressed ........Masha Allah .....dad qubool kijiyai :)
By: farah ejaz, dearborn, mi USA on Mar, 17 2015
Reply Reply to this Comment
fit ghazal hey
By: snowber Michael, Islamabad on Dec, 17 2014
Reply Reply to this Comment
آداب
By: Naveed Razzaq Butt, Lahore on Mar, 16 2015
very nice and true poetry...
nice to read ...
best wishes always
By: muhammad nawaz, sangla hill on Jun, 01 2014
Reply Reply to this Comment
بہت شکریہ نواز بھائی۔ سلامت رہیں۔
By: Naveed Razzaq Butt, Lahore on Jun, 05 2014
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.