مریم نواز کی اداروں کے خلاف تقاریر نے خطرات پیدا کردیئے

(Mian Khalid Jamil {Official}, Lahore)

مریم نواز کےٹویٹس، بیانات اور مسلسل تقاریر میں اداروں کیخلاف بولنے سے جہاں دھشت گردوں کو توانائی سے بھرپورحوصلہ ملا وھاں بھارت و افغانستان بہت خوش اور مطمئن ھوئے جبکہ عالمی سطح پر آج پاکستان تنہا کھڑا ھے حالانکہ پاکستانی فوج نے 15 ھزار دھشتگردوں کا صفایا کردیا جبکہ سیاسی قیادت نے دھشتگردوں سے زیادہ نقصان ' میگا کرپشن کلچر سے کردیا جسوجہ سےآج ملک ھرجانب سےخطرات کا شکار ھےجبکہ اندرون ملک گورنس زیرو سے بھی بدتر ھوچکی ھے۔۔ صرف صفائی پر کراچی اور لاھور جیسے دنیا کے بڑے شہروں کی شناخت گندگی کے ڈھیر ھیں، بیرون دنیا میں پاکستان کیلئےاعتماد کی بحالی میں رکاوٹ کیلئے دانستہ اک بڑا عرصہ وزیرخارجہ نہ بناکر ملک دشنمی کا ثبوت دیاگیا، پاک فوج کیخلاف حکومت میں شامل عناصر نے قومی اداروں کیخلاف تقاریر لکھ لکھ کر اور چند گمراہ عناصرز کو سرکاری و پرائیویٹ ٹی وی چینلز پر بٹھاکر پاکستان کو بھارت کا کٹھ پتلی بنانے اور پاک فوج کو بدنام کرنے پر لگایا گیا، پاکستان کے اداروں پراٹیک کرنیکا مقصد پاکستان کو افغانستان اور عراق بنانا ھےاور یوں آج
قومی سلامتی کو شدید خطرات لاحق ھیں اگر فوری کچھ نہ کیاگیا تو فیڈریشن کو خطرہ شدید لاحق ھوسکتاھے۔۔ سوشل میڈیا کیمطابق : جب سے ممتاز قادری کو پھانسی دی گئی تب سےپاکستان میں موجود بریلوی طبقہ شریفس کیخلاف ھوگیاجبکہ ریمنڈڈیوس کی رھائی میں پنجاب حکومت مکمل ملوث رھی، جماعت الدعوہ پر پابندی لگنےسےدیوبندی طبقہ خلاف ھوگیا اور کشمیر کاز کمزور ھوا، پولیس ٹرکوں میں مذھبی افراد کی پولیس حراست میں ھلاکتوں سمیت اندھے قتلوں پر یہ بھی نوازشریف بالخصوص پنجاب حکومت کیخلاف، سعودی فوجی اتحاد میں پاکستان کی شمولیت سے اھل تشیع ووٹ بنک نوازشریف کیخلاف ھوا، بلوچستان کی 80 فیصد پاپولیشن اھل تشیع ھے جبکہ پختونوں کیطرح آدھا بلوچستانی قبائل ایران کےاندر ھے اور آدھا پاکستان میں اور موجودہ حکومت کی تباہ کن داخلی و خارجی پالیسیوں کا براہ راست فائدہ راء کو ملا، انکی محفوظ رسائی رمضان شوگر مل تک ثابت ھوئی اور مودی کا شریف کی شادیوں میں آنے سےملک دشمن تمام عناصر و دھشتگردوں کو بھرپور حوصلہ ملا، راء کی موجودگی پر اھل تشیع بلوچوں کے قتل سےحکومت کی رٹ اور داخلی سلامتی خطرات کاشکار ھوئی اور سب سےبڑا نقصان سعودی اتحاد میں شمولیت ثابت ھونا نظر آیا۔۔ اھل تشیع کی اکثریت مالاکنڈ اور ھزارہ ڈویژن میں کثرت کیساتھ ھے جبکہ صوبہ گلگت بلتستان میں بھی اھل تشیع کی اکثریت کےبعد پنجاب اور kpk کے ھر بڑے ضلع میں انکے بڑے ماتمی جلوس نکلتے ھیں جہاں انکی اکثریت ثابت ھوتی ھے اھل تشیع کی پاکستان کے ھر شعبے میں نمائندگی موجود ھے، پاکستان میں کسی بھی مسلک سے منسلک ووٹ بنک آج نواز شریف کیساتھ نہیں صرف ایک علامہ ساجد میر جو اھلحیث ھے اور ن لیگ کے ووٹوں سے ھمیشہ سینیٹر بنے اسکی کیا یہ وجہ تو نہیں کہ ضیاء دور میں جب وزیراعلی نوازشریف تھےتب علامہ احسان الہی ظہیر مسلسل ضیاءالحق کیخلاف جلسے کرنے میں مصروف تھے اور اسی تسلسل کے تحت راوی روڈ گول چوک جلسے میں بم دھماکے سے 8 افراد موقع پر شہید جبکہ علامہ احسان الہی شدید زخمی ھوئے اور سعودی جہاز انہیں علاج کیلئے سعودیہ لےگیا جہاں انتقال کےبعد جنت البقیع میں دفن ھوئے اس واقعہ کے بعد اسکا الزام جماعت اھلحدیث نے نواز شریف پر لگادیا اور احتجاج شروع ھوگئے جسکی قیادت پروفیسر ساجد میر کیاکرتے تھے اور جب احتجاج میں جان پڑنی شروع ھوئی تو ماسٹر مائنڈ میاں شریف نے انکا ایمان کچھ اسطرح سے خراب کیا کہ آج اک عرصہ گزر جانے کے بعد بھی نوازشریف کو نہ جانے کیا انجانا خوف ھے کہ وہ اکیلے ساجد میر کو اب بھی سینیٹر اپنے ووٹوں سےھی بنواتے ھیں اور انہی سے اھم بیانات بھی دلوا دیتے ھیں اور وہ موصوف پھر خفیہ بتا بھی دیتے ھیں جسطرح ایک بیان جنرل قمرجاوید باجوہ صاحب کے مرزائی ھونے کا دیدیا تھا اور ساتھ یہ بھی کہہ دیاتھا کہ جنرل صاحب کے والد کی قبر ربوہ میں ھے جبکہ حقیقت یہ کہ انکے نیک مرحوم والد میجر جاوید اقبال راسخ العقیدہ سچے عاشق رسول تھے اور انکی قبر مبارک جنرل صاحب کے آبائی علاقہ گکھڑ میں ھے اور پروفیسر ساجد میر نے اپنے بیان میں دھمکی دی تھی کہ اگر انکو آرمی چیف بنایا تو وہ تحریک چلا دیں گے اور چونکہ تحریک سیاسی ھوتی بے اور یہ سینیٹر ن لیگ کے ووٹوں سے بنتے رھے تو تحریک بھی ن لیگ نے ھی چلانی تھی مگر شریفس کی امنگوں کیخلاف سنیارٹی کی بنیاد پر آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ ھی بن گئے اور شریفس جنرل زبیر کیخلاف بھی تھے مگر وہ بھی سنیارٹی پر چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف بن گئے اسکے فوری بعد ن لیگی سینیٹر بابے نے سچ اگل دیا اور ساتھ بیان مبارکباد برائے آرمی چیف بھی ٹھوک دیا اس سے اگلے دن شیطان پالتو چیلا مجیب الرحمان شامی ساجد میر کی کلیئرنس کیلئے اپنے ٹاک شو میں صفائیاں دینا شروع ھوا جبکہ یہ صفائیاں شہبازشریف کے حق میں تھیں مگر بھانڈا پروفیسر خود پھوڑ چکے تھے اور کل رات پھر شریفس کے کہنے پر دوسرا دھماکہ خیز بیان ٹھوک دیا کہ کلثوم نواز وزیراعظم نہیں بنے گی وہ صرف ایم این اے کا حلف اٹھائیگی ورنہ ھم دینی لحاظ سے کلثوم نواز کیخلاف تحریک چلا دیں گے۔۔ اور بابے نے پھر بتادیاکہ یہ بیان بھی انکی جانب سے بولنے کیلئے تحریری ملا اور پرویز رشید نے دیا جبکہ یہ حقیقت سب جانتے ھیں کہ این اے 120 میں دوبارہ الیکشن ھونگے کیونکہ کلثوم نواز کو جب تک سعودیہ اور امریکی سگنل نہیں ملے گا وہ پاکستان نہیں آئیں گی اور یوں سیٹ حلف نہ اٹھانے پر خالی ھوگی اور بابے سے بیان دلوانے کا مقصد صرف اداروں کے ارادے چیک کرنا ھیں اور فوج تو نیوٹرل ھے ورنہ وہ اپنا ٹویٹ کبھی واپس نہ لیتی جبکہ سپریم کورٹ ریاست کا آئینی ادارہ ھے جو آئین کیمطابق چل رھا ھے۔۔ اب اقتدار کے پرانے رسیا ازخود آئن سٹائن ٹوپے والا ذھنی مریض جس نے ابھی چونکہ لاھور میں مزید تباہ کاریاں کرناھیں لہذا اب وہ چوھدری نثار کیساتھ مل کر نئی مسلم لیگ بنانے کے چکر میں ھے جبکہ اسے یہ پتہ ھے کہ اڈیالہ جیل کےکمرے صاف ھوچکےاب وہ بھی بس کسی وقت جیل جاسکتےھیں اور وھاں سے وطن سے محبت کا بھاشن دیاکریں گے۔۔ آجکل PTV پر انڈین لابی کا کنٹرول ھےاور دوسرے نمبر پر وھی قاسمی کنجر آجکل بغیر ڈوپٹے والی گھومنے والی عورتوں کے پھرنے کی آزادی کے حق میں دلائل دیتا نظر آتاھے۔۔ اس نے PTV پر اپنی سپریم کورٹ لگارکھی ھوتی ھے اور 3 بچوں کی ماں کو اگر کوئی دوسرا شخص پسند آگیا تو اسے طلاق لینے کا حق ھے کے دلائل دیتاھے اور ماروی سرمد کو بٹھاکر اس پلانٹڈ خاتون کو ضمانت دیتاھے کہ تیرا سارا عدالتی خرچہ یہ این جی او اٹھائیگی جبکہ اداکارہ نور کو کہا کہ 5 شادیوں کےبعد بھی تم کنواری لگتی ھو اور ریما سمیت آئے دن کنجروں کی برسات اور راء کے سکھ ایجنٹس کے فونز کا آنا اور ان سے قاسمی کا دعائیں کرانا سمجھ نہیں آرھاتھاکہ اچانک قاسمی نے کہہ دیاکہ دو سرحدوں کےدرمیان ایک کچی پنسل کی لکیر ھےاور اتنا بڑا جھوٹ بول دیا توبہ کہنےلگا کہ میاں شریف نےقیام پاکستان کےوقت قائد اعظم کو اور فاطمہ جناح کی آمریت کیخلاف تحریک میں بھاری فنڈنگ کی تھی اور اسکی گواھی کون دے رھاھے؟ بڈھا الطاف حسن قریشی کہ میں گواہ ھوں ۔۔ جبکہ قاسمی باقی وقت وہ ان اینکروں کے نام لیکر مخالفت کرتا ھے جوخالص محب وطن اور قومی امنگوں کی نمائندگی کرتے ھیں اور انکے ناموں کو شہبازشریف نے بھی لیا تو ثابت ھوا کہ یہ نام بھی قاسمی نےشہبازشریف کےکہنے پر لئے جن میں سمیع ابراھیم، عارف حمید بھٹی، ارشدشریف کا نام شامل ھے اور قاسمی نے ملک دشمنی کا سرٹیفکیٹ بھی دیدیا اور قاسمی اتنا حرامدہ انسان ھے کہ ریحام خان کو شو میں بلاکر پوچھا کہ اس عمر میں کیا عمران خان شادی کے قابل ھے؟ قاسمی سے کوئی پٹھان پوچھےکہ جب تک عمران تیری گانڈ نہیں مارے گا 'تب تک کیا تجھے یقین نہیں آئے گا؟ اور ایک دن قاسمی نے کسی خاتون کو شو میں بٹھایا اور کہا کہ میں نے سناھے کہ عمران کئی بار حوش و ھواس کھوکر بنی گالہ ننگا پھرنا شروع کردیتاھے اسے پتہ ھی نہیں چلتا اور ملازمین کمرے میں لے جاتے ھیں پلانٹڈ خاتون ھاں میں ھاں ملاتی ھے یوں PTV اب کنجر خانہ بن چکا کیونکہ قاسمی بھی بڑا کنجر ثابت ھوچکا جسکی باتوں سے ثابت ھوتاھے کہ وہ بہت بڑا ٹھرکی بابا ھے اور چاھے کسی وقت موت کا فرشتہ اسکے پاس کیوں نہ آجائے وہ یہی کہے گا کہ آج کا دن دے دو میں نے شہبازشریف کےحق میں دو آدمیوں کونقلی پورپ سے بلارکھا ھے۔۔

یہ قاسمی وطن دشمن اور قومی سلامتی اداروں کیخلاف بہت بڑی فلم چلارھاھے اور اتنا ڈھیٹ ھے کہ واضح کہتاھے کہ کوئی ھے جو مجھے اس سیٹ سے اتار سکے اگر کوئی ھے تو ھمت کر کے دکھائے؟ اب میں اس بڈھے کو کیا کہوں؟ جسے اپنی عمر اور اپنی عزت کرانا نہیں آتی اور نہ اسے اپنی بچیوں کا خیال ھےکہ وہ کیا سوچتی ھونگی؟ میرے جیسا شخص جس نے کبھی اخلاق کا دامن ھاتھ سے نہیں چھوڑا مگر مجبور کردیا اور 2 باتیں اس تک پہنچانے کیلئے لکھنا پڑیں شاید سمجھ جائے؟؟ کیا یہ محب وطن ھیں؟؟ کامران لاشاری، محی الدین وانی جیسے سب سپلائیر ھیں انکی موجودگی میں سرکاری ٹی وی بھی کنجر خانہ بن چکا۔۔

حکومتی غلط ترین پالیسیوں نے پاکستان کو داخلی اور خارجی محاذ پر سخت خطرات سےدوچار کردیاھےآج پاکستان بند گلی میں کھڑاھے، آج حکمران جماعت کی شناخت ن لیگ نہیں بلکہ ھر طرح کے مافیاز سمیت کرپشن کا تحفظ انکی پہچان ھے، ن لیگ کا وجود صرف اقتدار اور حکومتی مشینری سمیت مافیاز کے تسلط سے ھے آج گندگی سے لیکر ناجائز موٹر سائیکل ھزاروں سٹینڈز کیوجہ سے ٹریفک کی بندش اور اورینج لائن روٹ پر ڈسٹ سے سارے لاھور میں بیماریاں پھیل گئیں، عوام ذھنی مریض بن گئی بلکہ شہبازشریف نےسب کو اپنی طرح پاگل بنادیاھے، آج ھسپتالوں کی ضرورت کم اور پاگل خانوں اور مردے خانوں کی ضرورت زیادہ ھے، جس دن کرپٹ بدعنوان حکومتی اقتدار چلاگیا ھرجانب سکون بحال ھوجائیگا، یہ حکومت لوڈشیڈنگ جیسے بڑے مسائل سے لیکر صفائی تک مسائل حل نہیں کرسکی، انہوں نے اپنی پارٹی کے جانثار مخلص قربانیاں دینے والےکارکنان کو اپنا دشمن بناڈالا آج انکے کارکنان کو خود ججمنٹ ھوگئی ھے کہ یہ ملک توڑنے کےایجنڈے پر ھم پر مسلط زبردستی ھوئے ھیں، آج ن لیگ بھی ختم اور تبدیلی کا بھونچال بس اب دور کی بات نہیں، آتش فشاں پھٹنے کیلئے تیار ھے اور اسکی مکمل ذمہ داری شریفس پر ھے کہ نوازشریف جب سے جلاوطن ھوکر واپس آیا، کسی کو نہیں ملا اور نہ کارکنان کو مضبوط کرنے کیلئے تنظیمی امور پر توجہ دی اور یہی حال شہبازشریف کاھے جس کے رویئے سے کارکنان سے لیکر وزراء تک مایوس ھیں اور پارٹی تنظیمی امور کو دانستہ خراب کیا، بلدیاتی نظام دانستہ ڈمی متعارف کرایا اور سارے پنجاب میں صفائی کی ٹھیکیداری سے لیکر تمام بڑے پراجیکٹس کی شفافیت میں بڑے پیمانے پر بےضابطگیاں سامنے آچکیں اور پارٹی بیروزگاروں کو دھتکارنے، وزیراعظم سے لیکر ایک ایم پی اے تک کےذمہ داران اپنے علاقائی ضروری مسائل حل تک نہ کراسکے اس سمیت سمیت شعبہ صحت، تعلیم ایک بڑا کاروبار دانستہ بنایا گیا، صاف پانی کی عدم دستیابی پر آج سارے ملک میں شور پایا جاتاھے اور ھر 15 دن بعد پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں رد و بدل نے ملٹی و نیشنل مصنوعات کمپنیوں کو ھر شہری کی جیب پر ڈاکہ ڈالنےکی کھلی چھٹی دیدی ھے جسوجہ سے عوام ذھنی مریض بن گئی اور ادویات پر بے تہاشا ٹیکس اور حج جیسے دینی فریضے پر بھی ٹیکس لگانے سے غیر مسلم ممالک بھی حیران ھوئےاور ھر سال ھر کلاس کے تعلیمی نصاب کے تبدیل کرنے پر عوام سٹ پٹاگئی اور میڈیکل انٹری ٹسٹ سمیت کئی جگہ غیر ضروری ٹسٹ نے سفید پوش سے اوپر والے طبقات کو بھی سڑکوں پر آنے پر مجبور کردیا حتی کہ وکلاء کے بعد ینگ ڈاکٹرز و نرسز پر بھی دھشتگردی کے مقدمے دائر کئے گئے اور جب اندھے اپنے حقوق کیلئے باھر آئے تو ان پر بھی لاٹھیاں برسادی گئیں یوں گلی گلی محلے محلے گندگی کےڈھیر بیماریاں بانٹنے لگے جبکہ شریفس ' دولت اور طاقت کے نشے میں کسی کی ھدایت لینے یا بات سننے تک تیار نہیں بلکہ انہیں یہ بھی نہیں پتہ کہ انکے اداروں کیخلاف بیانات سے دھشتگرد حوصلہ پکڑ رھے ھیں، مرکزی، صوبائی، ضلعی تنظیمی دفاتر کو دانستہ تالے لگادیئے گئےتاکہ کسی کا کام نہ کرنا پڑجائے، میاں شریف کی روح کو راحت نہ مل سکے اور انکی بوڑھی ماں کو سب پتہ ھے جو خود بنک ڈیفالٹر ھے مگر اسے بھی آخرت پر یقین نہیں ورنہ وہ لازمی اپنے بیٹوں کو پاس بٹھاکر کہتی کہ پاکستان بہت قربانیوں سے حاصل ھوا اور اپنے بیٹوں کو بھلائی کرنیکا حکم دیتی مگر اس نے تو میری مرحومہ والدہ کو میرے لئے ملازمت دینے سے معذرت کرلی تھی اسکی تسبیح اسکے کسی کام نہیں آنی جسکو یہ نہیں پتہ کہ ھمارے نبی پیلے رنگ کے پھولوں سے منع فرماتے تھے اور گلاب کے پھول پسند کرتے تھے کیونکہ مکہ کے بت پرست اپنے بتوں کے آگے پیلے پھول چڑھاتے تھے اور آج میاں شریف کی ساری قبر پر پیلے پھول ڈالے جاتے ھیں اور اسکی بیوہ شمیم اختر نے کبھی اپنے بچوں نوازشریف، شہباز شریف کو منع نہیں کیا۔۔ اب پتہ نہیں کہ انکا مذھب کونساھے؟ کیونکہ پیلے پھولوں کا ڈھیر لگاتے نوازشریف کی تصویر میرے پاس محفوظ ھے وھاں اسکی والدہ بھی ویل چیئر پر ھے کیا وہ انہیں نیکی و بھلائی کرنے کی ھدایت نہیں دے سکتی؟ وہ کہہ نہیں سکتی کہ اتنی دولت کہاں لیکر جانی ھے؟

سارے ملکی امور سمیت ترقیاتی کاموں کے ٹھیکیداروں اور من پسند افراد کو خوب نوازا گیا جو 10 افراد تک اکٹھے نہیں کرسکتے تھے اور نئی نسل اب ایسے وقت سے بیزار ھو چکی جب انہیں پتہ چلا کہ پہلے نائن اور ٹین کلاسز کی الگ الگ اسناد اور اسی طرح ایف اے، ایف ایس سی میں بھی عجیب نظام اور انٹری ٹسٹ سمیت تعلیمی نصاب میں اسلامی لٹریچر نکالنا اور غیر معروف انتہائی متنازعہ افراد کو بڑی شخصیات بناکر مضامین میں شامل کرنے پر قومی دانشور حیران، سارے نظام کو چند ھاتھوں میں دینے سے آج پاکستان کاھر شعبہ اسقدر متاثرھوچکاجسکے انتہائی خطرناک نتائج برآمد ھوسکتے ھیں اب میٹرک 3 سال، ایف ایس سی 3 سال، گریجویشن 4 سال، ماسٹر 4 سال میں ھوگا اور تعلیمی اداروں کی لوٹ مار عروج پر ھوگی جو ماسٹر ڈگری پاس کریگا وہ بوڑھا ھوجائیگا پھر میٹرک پاس وزیر کے پیچھے نوکری کیلئے بھاگے گا یہ معاملہ بہت خطرناک ھے بالخصوص نوجوان طبقہ جو اعلی تعلیم یافتہ ھیں وہ پیٹ کی خاطر کسی طرح کی بھی منصوبہ بندی کرسکتےھیں یوں حکومت کی عوامی امنگوں کیخلاف انتہائی غلط پالیسیوں نےقومی اداروں کیلئےخطرات کھڑےکردیئے جس سے قومی سلامتی، داخلی معاملات سنگین ھوتے جا رھے ھیں، جسکا واحد حل صرف اب قومی اداروں کے پاس ھے۔۔

اب ملک بیرون ملک علاج کرانا اور علاج کے دوران بیرون ملک بیٹھے بیٹھے الیکشن لڑنا اور انجینئرڈ طریقے سے دھاندلی کراکے اپنے حق میں نتائج نکلوانے سمیت ویڈیو لنکس کے ذریعے بیرون ملک بیٹھ کر حکومت کرنیکانیا نظام متعارف کرانا ساری قوم کی سمجھ سے باھر ھے اور سارے ملک کے اھم شعبوں میں مٹھی بھر ایک ھی کشمیری برادری کے بٹ، خواجے، وائیں، ڈار دھونس جماکر بیٹھ گئےھیں اور تمام نوازشات صرف انہی کیلئے، 5 / 5 سو کلاشنکوف لائسنس انہی کے پاس اور بنائے گئے بڑے بڑے قبضہ گروپس، آج ملکی سلامتی کیلئے ایک بہت بڑاخطرہ صرف شریفس کیوجہ سے، جنہوں نے ھر مافیاز کا خطرناک کلچر متعارف کرایا

آج لڑکیوں کے تعلیمی اداروں میں منشیات فروختگی کی خبریں بھی دیکھ کر قوم پریشان، فوج کیخلاف ٹاک شوز پر کوئی پابندی نہیں البتہ مارننگ شوز میں انتہا بےحیائی اور قاسمی نے سرکاری ٹی وی کو کنجر خانہ بناکر رکھ دیاھے جبکہ عیسائیوں اور سکھوں کےعلاوہ اسکے پاس کوئی اور موضوع ھی نہیں اسکے بس میں نہیں وہ مینار پاکستان کو گرادے جسکے ایک جانب شہبازشریف نے سڑکیں اسقدر اونچی بنادی ھیں کہ مینار پاکستان کاباغ سطح سڑک سے 7 فٹ نیچے چلاگیا اور بنایا گیا آزادی سکنل فری پل کا سارا پانی مینار پاکستان میں آجاتاھے اور بارش زیادہ ھونے پر جب تالاب بن جاتاھے تو پمپ چلائےجاتے ھیں ۔۔ مینار پاکستان کے 5 انٹری گیٹ تھے جو اب صرف 2 ھیں ایک پبلک کیلئے اور ایک سکھوں کیلئے رنجیت سنگھ کی مڑی کیساتھ ۔۔ قاسمی انڈیا پاکستان کے درمیان سرحد کو کچی پنسل کی لکیر کہتاھے۔۔

ھماری بہادر قوم کے80 ھزار شہریوں، فوجیوں اور پولیس اھلکاروں نے اپنے خون سے پاکستان کی سرزمین سرخ کرکے اسے بچایا جبکہ 25 سیاسی افراد کی گردنیں ساری قوم مانگتی ھے جنہوں نے اس ملک کے فقیروں تک کی جیبیں کرپشن سے صاف کردیں، پاکستان کو دھشتگردوں نے 125 ارب ڈالر کا نقصان پہنچایا جبکہ حکومتی کریشن نے ایک ھزار ارب ڈالر کا نقصان کرکے پاکستان کو 200 سال پیچھے کردیاھے۔۔ پاک دھرتی کو سب نے خون دیا اب باری گنتی کے بدمعاش کرپٹ عناصرز کے خون کی دھرتی کو ضرورت خاص ھے جنہوں نے ھر مافیاز کو عوام کے کندھوں پر بٹھایا۔۔ رب ذوالجلال کی قسم اتنا نقصان دھشتگردوں سے پاکستان کو نہیں پہنچاجتنا مٹھی بھر کرپٹ سیاستدانوں نے پہنچایا جنکا خون یہ پاک دھرتی مانگتی ھے اگر ان کا خون دھرتی کو نہ ملا تو یہ ملک نہیں بچے گا، نہیں بچے گا، نہیں بچے گا۔۔ انکی خرمستیوں سے قانون، قومی سلامتی کے ادارے مذاق بن رھے ھیں اس سے پہلے کہ۔پاکستان عراق بن جائے، افغانستان بن جائے، شام بن جائے، ان سیاسی مٹھی بھر کرپٹ عناصرز کو انکی گردنوں سے پکڑ لو ۔۔۔ خدائے رب ذوالجلال کی قسم یہ ملک و قوم کے دشمن اور یہود و نصارا کے ایجنٹ ھیں۔۔۔ انکا خاتمہ ناگزیر ھے اور انکاخون پاک دھرتی پر گرنے سے ھی پاکستان کی خوشحالی پوشیدہ ھے ورنہ فیڈریشن کو خطرہ ھے اور قیام پاکستان کے وقت جتنے مہاجرین راستے میں قتل ھوئے تھے اور آزاد مسلمان ملک پاکستان وجود میں آیا تھا۔۔ آج ملک دشمن سرگرمیوں کے نتیجے میں ملکی سلامتی کو ان سیاسی بدمعاشوں سے زیادہ خطرہ ھے اور جان بوجھ کر ایک سیاسی محب وطن جماعت PTI کو عرصہ 20 سال سےاسکے راستے میں روڑے اٹکائے جا رھے ھیں اس سے پہلے کہ محب وطن بلوچ، فاٹا و خیبرپختونخواہ قبائل متحد ھوکر جنگجو کاروائیوں پر میدان میں اتر آئیں ملک کو بچالیں کہ مٹھی بھر بدمعاش کرپٹ گمراہ سیاستدانوں کا ٹولہ یہی چاھتاھے اسلئے ملک کی بقاء کیلئے بدمعاش سیاستدانوں کا خون اس دھرتی کی زمین کیلئے قرض ھے جو اتارنا ھوگا۔۔ بیت اللہ شریف اور روضہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا واسطہ دیکر قومی اداروں سے اپیل کرتا ھوں کہ اس پاکستان سے 16 ھزار دھشتگرد جہنم رسید کئے مگر وہ پھر بھی موقع پاکر کوئی نہ کوئی کاروائی کردیتے ھیں جسکا تعلق سیدھا کرپشن سے جاملتاھے اور مٹھی بھر ملک دشمن سیاستدان کرپشن سے جا ملتے ھیں۔۔ کرپشن کا دھشتگردوں کیساتھ مکمل گٹھ جوڑ ثابت شدہ ھے۔۔

ھمارے آباؤ اجداد نے اپنی نسلوں کو یہ دن دیکھنے کیلئے اپنی جانوں کی قربانیاں اور مال و اسباب لٹا کر ھجرت نہیں کی تھی کہ پاک وطن پر کرپٹ لوگ مسلط ھوجائیں اور آج یہ قومی اداروں سے بدمعاشی کرتے نظر آرھے ھیں۔۔

پاکستان کے پاسبانو! ساری قوم تمھارے ساتھ کھڑی ھے اور یہ آخری موقع ھے ملک بچانے کا اور اسے بچانے کیلئے کرپشن کا خاتمہ، اشرافیہ اور محلات سے شروع کیاجائے اور مٹھی بھر بدقماش سیاسی عناصر کا خون اس دھرتی کو دیاجائے
{تحریر: میاں خالد جمیل}
 

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
20 Sep, 2017 Total Views: 237 Print Article Print
NEXT 
About the Author: Mian Khalid Jamil {Official}

Independent social, electronic, print media observer / Free lance Columnist, Analyst.. View More

Read More Articles by Mian Khalid Jamil {Official}: 164 Articles with 33783 views »
Reviews & Comments
very best column
By: Kon Hay Don, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
3 Like
please cool down mian sb.. its very hot column
By: Akbar Ali Akbar, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
1 Like
تھوڑا سا ھاتھ ذرا ہلکا رکھیں جناب
By: Mian Abid Jamil, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
1 Like
مریم نواز کی کچھ زیادہ ہی کلاس نہیں لے لی آپ نے؟
By: Agha Amjad, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
3 Like
ایک اچھا کالم پڑھنے کو ملا
By: Ali Abid Ali, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
3 Like
meaning full column
By: Mian Shahid, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
1 Like
wonderful mian sb !
By: Wafadaar Hein Hum, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
3 Like
impressive column
By: Abid Hussain, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
2 Like
Fantastic column,
Thanks Mian sb!
By: Abu Hamza, Lahore on Sep, 21 2017
Reply Reply
1 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB