حلال گوشت چاہیے تو پہلے تم گارنٹی دو کہ---

(Khawaja Mussadiq Rafiq, Karachi)

آج گوشت لینے دوکان پر گیا تو دوکاندار کو سر تھامے پریشان بیٹھا پایا ۔ خلاف معمول دوپہر گئے بھی کُنڈے پر (نیک گمان کے مطابق) گائے کی ران سالم لٹک رہی تھی ۔ دوکاندار سے پُرانی جان پہچان ہے ۔ خیریت ہے ٹوکے !! کچھ پریشان سا لگ رہا ہے ؟؟
ٹوکا میں اُسے پیار سے بولتا ہوں ریٹ کا مہنگا اور بہت پکا ہے ۔ ارے مولانا خاک خیریت ہے !! اُس نے بھی مجھے میرے لیے مخصوص عرفیت سے پُکارا ۔ اس وقت تک پندرہ ہزار کا کام ہو جاتا تھا اور ابھی چار ہزار بھی پورے نہیں ہوئے !! جسے دیکھو مشکوک نظروں سے دوکان کو گھورے جا رہا ہے !!
ہممم واقعی میڈیا نے بدنام کر دیا ہے تمھاری فیلڈ کو !!
اچھا دام کیا ہے ؟؟؟
چار سو پچاس ہے ۔
میں نے ہزار کا نوٹ اُسے تھماتے ہوئے ڈیڑھ کلو کا آرڈر دے دیا ۔
ویسے یار آپس کی بات ہے ناراض نہیں ہونا ۔ میں نے جھجکتے ہوئے کہا بس اتنی گارنٹی دے دے کہ ہے تو "" حلال "" نا !!
چھری ران سے ہٹاتے ہوئے انتہائی سرد لہجے میں کچھ یُوں گویا ہوا۔ "" مولانا صاحب جس دن آپ نے اپنے نوٹوں کی گارنٹی دے دی کہ یہ حلال کے ہیں تواُس دِن مجھ سے بھی گارنٹی لے لینا گوشت کی !!!
اچھا بھائی جلدی تول دے مہربانی ہوگی سبزی بھی لینی ہے !!!!!

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
16 Apr, 2017 Total Views: 1889 Print Article Print
NEXT 
Reviews & Comments
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB