میں سلمان ہوں ( قسط 15)

(hukhan, karachi)

آج جس دوراہے پر میں کھڑا ہوں نا تو میرے کندھے اس بوجھ کے سنبھال پا رہے ہیں نا ہی میری ٹانگیں ان پتریلی راستوں کے عادی ہے میری پاس بس کھونا کھونا ہی ہے--- رہ دے کے صرف ماں باپ کی دولت ہی رہ گئی ہیں --- فیملی اب پھر سے خاندان نہیں بن پائے گا --- بس اب ہم ان میں سے ہے جو اپنی طعبی عمر پوری کرتے ہیں ---- جو کھانا پورا کرنے کے لیے سبزی یا گوشت کے بجائے پانی کا استعمال کرتے ہے--- جو سب صرف ایک ساتھ ایک ٹائم اس لیے کھانا کھاتے ہیں کہ کہے کھانا ختم ہوا تو وہ بھوکا رہ جائے گا--- آپ لوگوں کی گاڑی بہت آگے نکل گئی ہے--- اور اگر ہم ایک ہی گاڑی کے مسافر ہے تو میں 3rd کلاس کا اور آپ لوگ Buisness Class کے مسافر ہے --- جب میرا سفر ختم ہوگا تو میں اتنا گرد آلود ہو چکا ہوگا کہ کوئی اپنا بھی نہیں پہچان پائے گا-- آپ لوگ کالونی سے Society میں آگئے ہوں --- میں اس لباس اور پیدل ہوجانے کی وجہ سے یہاں Unfit ہوں-- یہاں تو Public Transport پر اتنی دور سے ملتی ہے کہ بندہ بس میں لٹکنے سے پہلے ہی تھک جاتا ہے --- جہاں تک لکھنے کا تعلق ہے -- میں بھوک کی وجہ سے لکھتا ہوں -- لفظ روٹی بن کے مجھے پالتے ہے -- ہاں یہ میرا کریئر نہیں ہے مگر جب تک کشتی نہیں مل جاتی --- مجھے اس لکڑی کے ٹکڑے کو ہی سہارا بنا کر خود کو ڈوبنے سے بچانا ہے مجھے زندگی گزارنی نہیں بلکہ اپنی زندگی بچھانی ہے ہو سکتا ہے میرا کل ایسا ہوں کہ مجھے گول مٹول سا چاند بھی روٹی نظر آئے -- میرا گھر روٹی کی وجہ سے تقسیم ہو رہا ہے --- میں جانتا ہوں پیار تقسیم کرنے کے لیے نہیں ہوتا --- پیار کو تو ضرب دیا جاتا ہے آپ نے اپنے عید کے ٹائم میں سے جتنا ٹائم مجھے دیا میں اس کے لیے مشکور ہوں --- آپ نے صرف اپنی زبان کی وجہ سے اپنے آپ کو اتنا بوجھ میں رکھا -- میں اس قابل بھی نہیں تھا --- میرے طرف سے آپ اپنے فیصلے میں آزاد ہیں جس طرح میں کسی کے مرضی یا فیصلے کا غلام نہیں ایسی طرح آپ لوگ تو اب دوسروں کے فیصلے بھی کر سکتے ہیں -- بھلا آپ کو اپنے فیصلوں کے لیے کوئی کیسے پابند کر سکتے ہے۔۔۔۔۔۔۔ جاری ہے)
 

Email
Rate it:
Share Comments Post Comments
11 Mar, 2017 Total Views: 365 Print Article Print
NEXT 
About the Author: hukhan

Read More Articles by hukhan: 28 Articles with 15521 views »

Currently, no details found about the author. If you are the author of this Article, Please update or create your Profile here >>
Reviews & Comments
very nice epi
By: abrish anmol, sargodha on Mar, 14 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: hukhan, karachi on Mar, 14 2017
0 Like
Very nice episode,,,,,,
By: Mini, mandi bhauddin on Mar, 13 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: hukhan, karachi on Mar, 13 2017
0 Like
umama ne bilkul thek kaha bhai welldone :)
By: Zeena, Lahore on Mar, 12 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: hukhan, karachi on Mar, 13 2017
0 Like
پیار تقسیم کرنے کے لیے نہیں ہوتا --- پیار کو تو ضرب دیا جاتا ہے --- بھائی یہ بیسٹ لائن تھی باقی سارا episode ہمیشہ کی طرح بیسٹ تھا welldone بھائی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
By: umama khan, kohat on Mar, 12 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: hukhan, karachi on Mar, 12 2017
0 Like
bahi kajwabh taqreer acha kia khuree khuree suna dee
By: aslam memon, karachi on Mar, 12 2017
Reply Reply
0 Like
thx
By: hukhan, karachi on Mar, 12 2017
0 Like
Post your Comments Language:    
Type your Comments / Review in the space below.
MORE ON ARTICLES
MORE ON HAMARIWEB